پرویز مشرف سے متعلق تفصیلی فیصلے نے خدشات کو درست ثابت کر دیا: ترجمان پاک فوج

تفصیلی فیصلے نے ہمارے خدشات کو سچ ثابت کر دیا: ترجمان پاک فوج

راولپنڈی: پاک فوج کے ترجمان میجر جنرل آصف غفور کا کہنا ہے کہ خصوصی عدالت کی جانب سے سابق صدر جنرل (ر) پرویز مشرف کے خلاف سنگین غداری کیس کے آج سامنے آنے والے تفصیلی فیصلے نے ہمارے خدشات کو درست ثابت کردیا۔

تفصیلات کے مطابق خصوصی عدالت کی جانب سے تفصیلی فیصلہ جاری ہونے کے بعد پاک فوج کے ترجمان میجر جنرل آصف غفور نے ایک مختصر پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ 17 دسمبر کے مختصر فیصلے پر جن خدشات کا اظہار کیا گیا تھا وہ آج تفصیلی فیصلے میں صحیح ثابت ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آج کا فیصلہ کسی بھی تہذیب اور اقدار سے بالاتر ہے اور چند لوگ آپس میں لڑوانا چاہتے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ افواج پاکستان ایک منظم ادارہ ہے۔ پاک فوج  ملکی سلامتی کو قائم رکھنے اور اس کے دفاع کے لیے اپنی جانیں قربان کرنے کی حلف بردار ہے اور ایسا ہم نے گزشتہ 20 سال میں عملی طور پر کرکے دکھایا ہے کہ جو کام دنیا کا کوئی ملک، کوئی فوج نہیں کرسکی وہ پاکستان اور افواج پاکستان نے اپنی عوام کے تعاون سے حاصل کیا۔ میجر جنرل آصف غفور نے اس عزم کا اظہار کیا کہ اندرونی اور بیرونی دشمنوں کو ناکام بنائیں گے۔

مزید پڑھیں: مشرف کسی صورت غدار نہیں ہوسکتے: ترجمان پاک فوج

ترجمان پاک فوج کا مزید کہنا تھا کہ ہم روایتی جنگ سے ہوتے ہوئے اب ہائبرڈ وار کا سامنا کررہے ہیں اور ہم اپنے بڑھتے ہوئے قدم پیچھے نہیں ہٹائیں گے۔ انہوں نے بتایا کہ آرمی چیف قمر جاوید باجوہ کی وزیراعظم عمران خان سے تفصیلی گفتگو ہوئی ہے۔ جبکہ انہوں نے اس معاملے پر ہونے والے فیصلوں کے حوالے سے میڈیا کو آگاہ کیا کہ اس حوالے سے حکومت کچھ وقت میں اس کا اعلان کرے گی۔

واضح رہے کہ سنگین غداری کے لیے قائم کی گئی خصوصی عدالت نے 17 دسمبر کو سابق صدر جنرل (ر) پرویز مشرف کے خلاف ایک مختصر فیصلہ سنایا جس میں انہیں غدار قرار دے کر سزائے موت سنائی گئی۔ اس فیصلے پر پاک فوج کی جانب سے خدشات کا اظہار کیا گیا۔ پاک فوج کے ترجمان کے مطابق 40 سال ملک کی خدمت کرنے والے جنرل (ر) مشرف غدار نہیں ہو سکتے۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment