پاکستان کے لیے فوجی تربیتی پروگرام دوبارہ شروع کیا جائے گا: امریکی محکمہ خارجہ

امریکہ کا پاکستان کے لیے فوجی تربیتی پروگرام دوبارہ شروع کرنے کا اعلان

اسلام آباد: جمعرات کے روز دفتر خارجہ نے بتایا ہے کہ ٹرمپ انتظامیہ نے فوجی تربیت اور تعلیمی پروگرام میں پاکستان کی شمولیت کو دوبارہ شروع کرنے کی منظوری دے دی ہے۔ امریکہ نے یہ پروگرام ایک سال قبل ختم کر دیا تھا۔ انٹرنیشنل ملٹری ایجوکیشن اینڈ ٹریننگ پروگرام (آئی ای ایم ای ٹی) ایک دہائی سے زیادہ عرصے سے امریکہ اور پاکستان کے فوجی تعلقات کا ایک ستون رہا ہے۔

امریکہ نے پاکستان کو  افغانستان سے امریکی فوجیوں کے انخلا کے بارے میں طالبان کے ساتھ بات چیت میں آسانی پیدا کرنے میں مدد کرنے کا سہرا دیا ہے۔

2019 کے شروع میں ہی کشمیری مجاہدین کے ایک حملے کے بعد، جس میں کم از کم 40 بھارتی نیم فوجی ہلاک ہو گئے تھے ، امریکی حکام نے پاکستان سے مطالبہ کیا تھا کہ وہ پاکستان میں چھپے دہشتگردوں کے خلاف مستقل کارروائی کرے۔

 امریکہ نے مزید کہا ہے کہ یہ پروگرام مشترکہ ترجیحات پر ہمارے ممالک کے مابین دوطرفہ تعاون بڑھانے کا ایک موقع فراہم کرتا ہے۔ امریکی محکمہ خارجہ کے مطابق امریکہ علاقائی سلامتی اور استحکام کو آگے بڑھانے والے ٹھوس اقدامات کو جاری رکھنا چاہتا ہے۔

ایک دوسرے امریکی عہدیدار نے اپنا نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ پاکستان نے امریکہ بھیجنے کے لئے افسران کا انتخاب کرنے کا عمل شروع کر رکھا ہے۔ تاہم ، پروگرام کو دوبارہ شروع کرنے کا عمل کانگریس کی منظوری سے مشروط ہے۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment