نواز شریف کی ضمانت کا آج آخری روز

Nawaz Sharif-Pakistan Muslim League

اسلام آباد: علاج کے لیے لندن میں مقیم سابق وزیر اعظم اور مسلم لیگ ن کے قائد میاں نواز شریف کی ضمانت کا آج آخری روز ہے۔

تفصیلات کے مطابق العزیزیہ ریفرنس میں نواز شریف کی سزا معطلی کے ضمن میں انہیں 8 ہفتوں کے لیے دی گئی ضمانت آج ختم ہو رہی ہے۔ میاں نواز شریف کو نومبر میں علاج کی غرض سے بیرون ملک جانے کی اجازت دی گئی تھی۔

اسلام آباد ہائیکورٹ نے 29 اکتوبر کو آٹھ ہفتوں کے لیے ضمانت منظور کی تھی۔ 13 نومبر کو وفاقی حکومت میاں نواز شریف کو باہر جانے کی مشروط اجازت دینے کا فیصلہ کیا تھا۔ حکومت نے اس اجازت کے لیے شرط لگائی تھی کہ انہیں 7 ارب روپے کا شیورٹی بانڈ جمع کروانا ہو گا۔

واضح رہے کہ میاں شہباز شریف کی جانب سے لاہور ہائی کورٹ میں بھی ایک درخواست جمع کرائی گئی تھی۔ لاہور ہائی کورٹ نے حکومتی استدعا کو رد کرتے ہوئے شہباز شریف کی جانب سے دائر کردہ درخواست کو قابل سماعت قرار دے دی تھی۔

لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس باقر نجفی اور جسٹس سردار احمد نعیم پر مشتمل دو رکنی بینچ نے سابق وزیراعظم نواز شریف کو بیرونِ ملک جانے کی مشروط حکومتی اجازت کے خلاف دائر درخواست پر 17 نومبر کو فیصلہ دیتے ہوئے انھیں چار ہفتوں کے لیے علاج کے لیے بیرون ملک جانے کی اجازت دی تھی۔

عدالت نے درخواست گزار شہباز شریف سے تحریری یقین دہانی کا مسودہ طلب کیا تھا۔ اس کے جواب میں شہباز شریف کی جانب سے عدالت میں تحریری یقین دہانی کا مسودہ پیش کیا گیا کہ نواز شریف علاج کے بعد وطن ضرور واپس آئیں گ۔ لیکن حکومتی وکیل نے اس پر اعتراضات اٹھاتے ہوئے اسے مسترد کر دیا تھا۔ بعد ازاں عدالت نے فیصلہ کیا کہ وہ اس حوالے سے مسودہ خود تیار کر کے فریقین کے وکلا کو دے گی۔

در ایں اثنا نواز شریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کا حکم دے دیا۔ عدالت نے ضمانت میں توسیع کے لیے 8 ہفتوں میں پنجاب حکومت سے رجوع کرنے کا حکم دیا تھا۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment