ایل این جی کیس: سابق وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل ضمانت پر رہا


راولپنڈی: سابق وزیر خزانہ اور مسلم لیگ ن کے رہنما مفتاح اسماعیل کو ایل این جی کیس میں ضمانت پر رہا دیا گیا ہے۔ مفتاح اسماعیل کی جانب سے احتساب عدالت میں ایک کروڑ روپے کے ضمانتی مچلکے جمع کروائے جانے کے بعد انہیں اڈیالہ جیل سے رہا کردیا گیا۔

ایل این جی کیس میں نیب نے رواں سال اگست میں سابق وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل کو گرفتار کیا تھا تاہم 23دسمبر کو اسلام آباد ہائی کورٹ نے ان کی ضمانت منظور کر لی تھی۔ آج نقدی کی صورت میں مچلکے جمع کرائے گئے جس کے بعد احتساب عدالت نے روبکار احتساب عدالت نے جاری کی۔ اس کے بعد مفتاح اسماعیل اپنی قانونی ٹیم کے ہمراہ اڈیالہ جیل سے اسلام آباد کی جانب روانہ ہو گئے تاہم انہوں نے میڈیا سے بات کرنے سے گریز کیا۔ 23دسمبر کو پراسیکیوٹر نے مفتاح اسماعیل کو ضمانت دینے پر تحفظات کا اظہار کیا تھا جس پر عدالت نے سابق وزیر خزانہ کو پابند کیا تھا کہ رہائی کے بعد روزانہ تفتیشی افسر کو فون کریں گے۔

ایل این جی کیس کیا ہے؟

مسلم لیگ (ن) کے رہنماؤں پر الزام ہے کہ انہوں نے ایل این جی ٹرمینل کے لیے 15 سال کا ٹھیکہ خلاف قاعدہ دیا۔ یہ ٹھیکہ اس وقت دیا گیا تھا جب شاہد خاقان عباسی وزیر پیٹرولیم تھے۔ نیب کی جانب سے اس کیس کو 2016 میں بند کردیا گیا تھا لیکن 2018 میں یہ کیس  دوبارہ کھولا گیا۔ نیب انکوائری میں یہ بات سامنے آئی تھی کہ سوئی سدرن گیس کمپنی لمیٹڈ (ایس ایس جی سی ایل) اور انٹر اسٹیٹ گیس سسٹم کی انتظامیہ نے غیر شفاف طریقے سے میسرز اینگرو کو کراچی پورٹ پر ایل این جی ٹرمینل کا کامیاب بولی دہندہ قرار دیا تھا۔ اس کے ساتھ ایس ایس جی سی ایل نے اینگرو کی ایک ذیلی کمپنی کو روزانہ کی مقررہ قیمت پر ایل این جی کی ریگیسفائینگ کے 15 ٹھیکے تفویض کیے تھے۔

سابق وزیر پٹرولیم اور سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کو 18 جولائی کو قومی احتساب بیورو (نیب) نے ایل این جی کیس میں گرفتار کیا تھا۔ 7 اگست کو ضمانت قبل از گرفتاری کی درخواست مسترد ہونے پر مفتاح اسمٰعیل کو بھی عدالت سے گرفتار کیا گیا تھا۔ دونوں مرکزی ملزمان شاہد خاقان عباسی اور مفتاح اسمٰعیل 4 ماہ سے زیر حراست تھے تاہم 23دسمبر کو مفتاح اسمٰعیل کو ضمانت مل گئی تھی۔ علاوہ ازیں نیب نے احتساب عدالت میں ایل این جی ریفرنس دائر کیا تھا، جس میں سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی، سابق وزیر خزانہ مفتاح اسمٰعیل، پاکستان اسٹیٹ آئل (پی ایس او) کے سابق منیجنگ ڈائریکٹر شیخ عمران الحق اور آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی (اوگرا) کے سابق چیئرمین سعید احمد خان سمیت 10 ملزمان کو نامزد کیا گیا تھا۔


Leave A Reply

Your email address will not be published.