برطانیہ سے 190 ملین پاونڈز کا معاملہ پبلک کیا جائے۔۔ سپریم کورٹ میں درخواست دائر


اسلام آباد: برطانیہ میں ایک اہم شخصیت کے ساتھ تصفیے کے نتیجے میں پاکستان واپس لائی جانے والی 190 ملین پاونڈز کی رقم کا معاملہ پبلک کرنے کیلئے سپریم کورٹ میں درخواست دائر کردی گئی ہے۔ یہ درخواست ایک عام شہری کی جانب سے دائر کی گئی ہے۔ درخواست میں وفاق، چیئرمین نیب، ڈی جی ایف آئی اے اور وزارت قانون کو فریق بنایا گیا ہے۔ اس کے علاوہ سیکرٹری خزانہ اور سیکرٹری داخلہ کو بھی فریق بنایا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ عدالت 190 ملین پاونڈز کی رقم کے بارے میں حکومت سے دستاویزات طلب کرے۔ حکومت برطانیہ سے 190 ملین پاونڈز ملنے کے معاملے کو عوام کے سامنے رکھے۔ 22 کروڑ عوام سے معلومات خفیہ نہیں رکھی جاسکتی۔ درخواست میں موقف اپنایا گیا کہ ایسٹ ریکوری یونٹ کی رپورٹ کے پیرا 10 کو خفیہ رکھا گیا ہے۔ پیرا دس کے نکات کابینہ ارکان کو بھی واضح نہیں بتائے گئے۔ ایسٹ ریکوری یونٹ رپورٹ کے پیرا دس میں بیرون ممالک سے واپس ملنے والی رقوم کا ذکر ہے۔ ایسٹ ریکوری یونٹ کے پیرا دس کو صرف عدالتی احکامات پر پبلک کرنے سے مشروط رکھا گیا ہے۔

یاد رہے کہ حال ہی میں برطانیہ کی نیشنل کرائم ایجنسی نے ٹوئیٹر پر یہ اطلاع دی تھی کہ ایجنسی اور پاکستان کی ایک نہایت بااثر شخصیت کے درمیان عدالت کے باہر ہونے والے تصفیے کے نتیجے میں حاصل ہونے والے 190 ملین پاونڈز کو پاکستان واپس بھیجا جائے گا۔

یاد رہے کہ حال ہی میں کابینہ کی ایک میٹنگ میں وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے احتساب کی جانب سے کابینہ کو اس معاملے پر ان کیمرہ بریفنگ دی گئی تھی۔ بریفنگ کے بعد کابینہ نے ایجنڈہ منٹس کو منظور کرتے ہوئے سیکرٹری کیبنٹ کو اس معاملے کو خفیہ رکھنے کا حکم دے دیا تھا۔ انہیں مزید حکم دیا گیا کہ اس معاملے کو صرف عدالتی معاملات کے لئے ہی کھولا جائے۔

این سی اے - آفیشل اکاونٹ
این سی اے – آفیشل اکاونٹ

Leave A Reply

Your email address will not be published.