ملک بھر میں طیاروں سے پرندے ٹکرانے کے واقعات میں اضافہ

اسلام آباد: ملک بھر کے مختلف ایئرپورٹس پر سال2019 میں طیاروں سے پرندے ٹکرانے کے واقعات میں تسلسل سے اضافہ رہا۔ پرندوں سے سب سے زیادہ پی آئی اے کے طیارے متاثر ہو ئے۔

تفصیلات کے مطابق مختلف ایئرپورٹس کے اطراف صفائی ستھرائی کے ناقص انتظامات،  گندگی پر منڈلانے والے پرندے جہازوں سے ٹکرانے کی وجہ بنے اور ملکی اور غیر ملکی ائیرلائن کے طیاروں کو نقصان پہنچا۔ پرندے ٹکرانے کی وجہ سے پی آئی اے کے طیاروں کو سب سے زیادہ نقصان ہوا۔ 12ماہ کے دوران پی آئی اے کے65 سے زائد طیاروں سے پرندے ٹکرانے کے واقعات رپورٹ ہوئے۔ پرندے ٹکرانے کی وجہ سے پی آئی اے کے 1سال میں مجموعی طور پر 18 طیارے بری طرح متاثر ہوئے۔ متاثر ہونیوالے طیاروں میں بوئنگ777 اور ایئربس320 شامل ہیں۔

کراچی اور لاہور ایئرپورٹ پر پرندے ٹکرانے کے سب سے زیادہ واقعات رپورٹ ہوئے۔ کراچی ائیر پورٹ پر پی آئی اے کے طیاروں سے پرندے ٹکرانے کے 30 واقعات رپورٹ ہوئے۔ لاہور ایئرپورٹ پر پی آئی اے کے 24 طیاروں سے پرندے ٹکرانے کے واقعات رپورٹ ہوئے۔ سکھر ایئرپورٹ پر 2، تربت میں 1، پشاور ایئرپورٹ پر 3، اسلام آباد ایئرپورٹ پر 6 جبکہ کوئٹہ میں پرندے ٹکرانے کے 3 واقعات رپورٹ ہوئے۔

ذرائع کے مطابق پی آئی اے کو طیارے سے پرندے ٹکرانے کے واقعات میں لاکھوں روپے کے اضافی اخراجات برداشت کرنا پڑے۔ جبکہ دوسری جانب طیاروں سے پرندے ٹکرانے کے واقعات سے پروازوں کا شیڈول بھی بری طرح متاثر ہوا۔

واضح رہے کہ سول ایوی ایشن اتھارٹی (سی اے اے) نے ملک کے کسی بھی ایئرپورٹ پر پرندوں کو بھگانے کیلئے جدید آلات نصب نہیں کئے۔ پی آئی اے سمیت غیر ملکی ایئرلائن نے بھی پرندے ٹکرانے کے واقعات پر سی اے اے کو اپنی تشویش سے آگاہ کیا تھا۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment