نیب کو بزنس کمیونٹی کے معاملات سے جدا کر دیا: وزیر اعظم عمران خان


کراچی :وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ آج آرڈیننس کے ذریعے نیب کو بزنس کمیونٹی کے معاملات سے جدا کردیا۔ ساتھ ہی نئے آرڈيننس کے ذريعے تاجروں کے لئے مزید آسانياں پيدا کررہے ہيں۔

تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم عمران خان نے پاکستان اسٹاک ایکسچینج کی تقسیم انعامات کی تقریب میں خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ انصاف اور ہمدردی کی بنياد پردنيا ميں مقام حاصل کيا جاسکتاہے، تاہم پاکستان کو ترقی کی منازل پر صف اول ميں لے جانا ہمارا وژن ہے۔ وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ رياست مدينہ انسانيت اور انصاف کے سنہری اصولوں پرقائم تھی اور آج بھی ترقی يافتہ قوميں انہيں دو بنيادی اصولوں پر عمل پيرا ہيں۔ پاکستان جس مقاصد کيلئے وجود ميں آيا تھا ہم اس کے لئے محنت کررہے ہيں کیونکہ پاکستان کی بنياد رياست مدينہ کی طرز پررکھی گئی تھی۔

نیب سے متعلق تاجروں کے تحفظات اور نیب کے ترمیمی آرڈیننس کے حوالے سے بات کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ بزنس کمیونٹی میں نیب کا خوف ایک بڑا مسئلہ تھا۔ آج آرڈیننس کے ذریعے نیب کو بزنس کمیونٹی کے معاملات سے جدا کردیا۔ نیب کو بزنس کمیونٹی سے دور کھنا بہت ضروری تھا کیونکہ یہ بڑی رکاوٹ تھی۔

وزیر اعظم نے چین کی ترقی پر بات کرتے ہوئے کہا کہ چين نے اپنی بہترين پاليسيوں کی بدولت ترقی حاصل کی۔ انہوں نے کہا کہ ہميں سوئيڈن جیسی اکانومی نہيں ملی تھی۔ اپنی تقریروں میں پچھلی حکومتوں کی کرپشن کے تذکرے کے حوالے سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ميں آپ کو بھولنے نہيں دوں گا کہ ہميں کيسا پاکستان ملا تھا۔ ان کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کی حکومت نے ایک سال کے دوران بہت سی کاميابياں حاصل کيں۔ تحريک انصاف کو انتہائی مشکل حالات ميں حکومت ملی تاہم ملک ميں کاروباری مواقع کوآسان بنانا اہم ترجيحات ميں شامل ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ سال 2019 استحکام لانے کا سال تھا جس میں روپيہ مستحکم اور بزنس کميونٹی کااعتماد بحال ہوا ہے۔ جبکہ نئے سال ميں روزگارکے مواقع پيدا کريں گے۔ شرح سود سے متعلق آگاہ کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ شرح سود بھی نيچے آجائے گی۔ 2020 ميں سرمايہ کاروں کيلئے سازگارماحول پيدا کريں گے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ تاجربرادری کيلئے ايف بی آر، عدالتيں اور ديگر ادارے موجود ہيں۔ انہوں نے کہا کہ ہماری معاشی ٹيم ہروقت تاجربرادری کيلئے دستياب ہوگی۔

یاد رہے کہ آج ہی وفاقی کابینہ نے وزارت قانون کی جانب سے نیب ترمیمی آرڈیننس 2019 کی سمری سرکولیشن کے ذریعے منظور کر لی ہے۔ یہ منظوری ایک ایسے وقت میں سامنے آئی ہے جب وزیر اعظم کو پاکستان سٹاک ایکسچینج میں تقریب تقسیم انعامات میں شرکت کرنا تھی۔


Leave A Reply

Your email address will not be published.