وزارت داخلہ کے ملازمین پر سوشل میڈیا کے استعمال کی پابندی۔۔ حکم چیلنج

Islamabad High Court

اسلام آباد: اسلام آباد ہائیکورٹ میں وزارت داخلہ کے ماتحت اداروں کے ملازمین کو سوشل میڈیا استعمال کرنے اور میڈیا سے رابطوں پر پابندی کا حکم چیلنج کر دیا گیا ہے۔ دائر کی جانے والی درخواست میں موقف اختیار کیا گیا کہ وزارت داخلہ کا اقدام آئین کے تحت حاصل آزادی اظہار رائے کی خلاف ورزی ہے ۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ میں سوشل میڈیا کے استعمال کی پابندی کے خلاف دارخواست اویس نامی شہری کی جانب سے دائر کی گئی ہے۔ درخواست میں موقف اختیار کیا گیا کہ وزارت داخلہ کا اقدام آئین کے تحت حاصل آزادی اظہار رائے کے خلاف ہے۔ ڈپٹی کمشنر اسلام آباد حمزہ شفقات کا ٹویٹر اکاونٹ غیر فعال کروا دیا گیا۔ ڈی سی اسلام آباد ٹویٹر پر ملنے والی شکایات کا فوری ازالہ کرتے تھے۔ ڈی سی اسلام آباد کا اکاؤنٹ غیر فعال ہونے پر یہ بات ٹویٹر پر ٹاپ ٹرینڈ بھی رہی۔

درخواست میں مزید استدعا کی گئی ہے کہ وزارت داخلہ کو 16 دسمبر کا نوٹیفکیشن واپس لینے کے احکامات جاری کئے جائیں۔ ڈی سی اسلام آباد سمیت دیگر حکومتی افسران کے سوشل میڈیا اکاونٹس عوامی مفاد میں بحال کئے جائیں۔ درخواست میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ وزیراعظم عمران خان، ڈی جی آئی ایس پی آر اور دیگر ممالک کی اہم شخصیات کے سوشل میڈیا اکاونٹس موجود ہیں۔ درخواست میں سیکرٹری داخلہ، کابینہ ڈویژن اور وزارت قانون و انصاف کو فریق بنایا گیا ہے۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment