اسلام آباد میں ایس ای سی پی کی چھٹی رجسٹرار کانفرنس کا انعقاد


اسلام آباد: وفاقی دارالحکومت میں ایس ای سی پی کی چھٹی رجسٹرا رکانفرنس کا انعقاد کیا گیا جس میں کارپوریٹ کمپلائنس کو مکمل طور پر ڈیجیٹلائز کرنے کا اعادہ کیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق ایس ای سی پی کی اس چھٹی رجسٹرار کانفرنس میں ملک بھر سے کمپنی رجسٹرار شرکت کر رہے ہیں۔ کانفرنس میں کمپنیز قانون کی کمپلائنس  کو بہتر بنانے  کے لئے ڈیجیٹل ٹیکنالوجی  کے استعمال پر غور کیا گیا۔ اس کے علاوہ ایس ای سی پی کی ای سروسز (آن لائن سروس) کو صوبائی محکموں کے ساتھ منسلک کرنے  کا بھی جائزہ لیا گیا۔

چئیرمین ایس ای سی پی عامر خان نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ڈیجیٹلائزیشن کے منصوبہ  کے تحت دو سال میں کمپنیز رجسٹریشن دفاتر کو  مکمل طور پر ڈیجیٹلائز کیا جائےگا۔ ان کا کہنا تھا کہ کمپنیز رجسٹرار ایس ای سی پی کا  چہرہ ہیں۔ ان کے کام، طرز عمل اور رویے کو ایک بہترین پبلک سیکٹر آرگنائزیشن کا عکاس ہونا چاہیے۔

پاکستان کے مستقبل کے حوالے سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پاکستان تیزی کے ساتھ ایک شفاف ،ڈیجیٹل اور مساوی  اقتصادی منظر نامے کی جانب بڑھ رہا ہے۔ ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ نئے پاکستان میں  سرمایہ کاروں کا اعتماد جیتنے کے لئے ایس ای سی پی  کا کردار بہت اہم ہے۔ انہوں نے نئے سٹارٹ اپس کو ایس ای سی پی کی جانب سے سہولیات کی ہر ممکن فراہمی کا بھی یقین دلایا۔

رجسٹرار کانفرنس سے کمشنر کارپوریٹائزیشن اینڈ کمپلائنس ڈپارٹمنٹ  شوکت حسین نے بھی خطاب کیا۔ انہوں نے بات کرتے ہوئے کہا کہ ایس ای سی پی کی اصلاحات اور آن لائن رجسٹریشن کو آسان  بنا دیا گیا ہے اور ایس ای سی پی کی اصلاحات کی وجہ سے  نئی کمپنیوں کی رجسٹریشن میں 39 فیصد  تک اضافہ ہو ا۔ ڈیجیٹلائزیشن کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ ایس ای سی پی میں 95 فیصد کمپنیوں  کی رجسٹڑیشن آن لائن کر دی گئی ہے جبکہ ایس ای سی پی کی ای سروسز پہلے ہی ایف بی آر اور اولڈ ایج بینیفٹ کے ادارے کے ساتھ منسلک ہیں۔ سٹارٹ اپس کو سہولیات کی فراہمی کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ ایس ای سی پی  کے تمام کمپنیز رجسٹریشن دفاتر میں اسٹارٹ اپ سہولت مراکز قائم کئے جائیں گے۔


Leave A Reply

Your email address will not be published.