پولیو کے 4 مزید کیسز سامنے آگئے


اسلام آباد: حال ہی میں نئے پولیو کیسز سامنے آنے کے بعد ایک بار پھر سندھ اور خیبرپختونخوا سے پولیو کے مزید 4 کیسز سامنے آنے کا انکشاف ہوا ہے جس سے رواں سال سامنے آنے والے کیسز کی تعداد 119 تک پہنچ گئی ہے۔

نیشنل انسٹیٹیوٹ آف ہیلتھ (این آئی ایچ) سے جاری شدہ ایک نوٹی فکیشن کے مطابق سندھ سکھر اور ٹنڈو اللہ یار کے اضلاع جبکہ خیبرپختونخوا میں بنوں اور ٹانک کے اضلاع سے پولیو کے کیسز سامنے آئے۔

تفصیلات کے مطابق ضلع ٹنڈو اللہ یار کی تحصیل چمبر میں 22 ماہ کے بچے کو پولیو کی علامات ظاہر ہونے پر صحت مرکز لایا گیا تھا اور پولیو کی تصدیق کے لیے طبی نمونے جمع کیے گئے تھے۔ تاہم پولیو سے متاثر ہونے کی تصدیق سے قبل ہی بچہ جاں بحق ہوگیا تھا۔ سندھ میں پولیو کا دوسرا کیس ضلع سندھ کی تحصیل نیو سکھر کی ایک بچی میں سامنے آیا۔ دوسری طرف خیبر پختونخوا کی تحصیل ٹانک کے رہائشی 15 ماہ کے بچے میں جبکہ بنوں کے علاقے میں 17 ماہ کی بچی میں پولیو کی تشخیص ہوئی۔

مزید پڑھیں: پولیو کا خاتمہ، حکومت کے دعوے دھرے کے دھرے رہ گئے

صوبائی اعداد و شمار کے مطابق رواں برس خیبرپختونخوا سے 83، سندھ سے 21، بلوچستان سے 9 اور پنجاب سے پولیو کے 6 کیسز رپورٹ ہوئے۔

واضح رہے کہ 18 اکتوبر کو وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے انسداد پولیو بابر بن عطا اپنے عہدے سے مستعفی ہو گئے تھے۔ سماجی رابطے کی سائٹ ٹوئٹر پر بابر بن عطا کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا تھا کہ انہوں نے ذاتی وجوہات کی بنیاد پر استعفیٰ دیا۔ پاکستان تحریک انصاف کے سوشل میڈیا ونگ کے رکن بابر بن عطا کو اکتوبر 2018 میں وزیراعظم کا فوکل پرسن برائے انسداد پولیو مہم تعینات کیا گیا تھا۔

یاد رہے کہ عالمی ادارہ صحت بے تحاشہ پولیو کیسز رجسٹرڈ ہونے کے سبب پاکستان پر پہلے سے عائد سفری پابندیوں میں بھی توسیع کرچکا ہے۔


Leave A Reply

Your email address will not be published.