صدر مملکت نے نیب آرڈیننس کی منظوری دے دی

National Accountability Bureau

اسلام آباد: وفاقی کابینہ کی منظوری کے بعد صدرِ مملکت نے نیب ترمیمی آرڈیننس کی منظوری دے دی ہے جس کے بعد وزارت قانون نے اس کا باقاعدہ نوٹیفکیشن جاری کردیا۔

نیب ترمیمی آرڈیننس 2019 کے مطابق ٹیکس، لیوی سے متعلقہ ایشوز اور تمام انکوائریز متعلقہ فورمز کو منتقل ہو جائیں گے۔ اس کے علاوہ احتساب عدالتوں سے ٹیکسز کے تمام مقدمات متعلقہ عدالتوں کو منتقل ہو جائیں گے۔

نیب ترمیمی آرڈیننس کی اہم ترین ترمیم میں سے ایک یہ ہے کہ نیب بدانتظامی پر عوامی عہدہ رکھنے والوں کیخلاف کارروائی نہیں کر سکے گا۔ عوامی عہدہ رکھنے والوں کیخلاف کارروائی صرف مالی فوائد اٹھانے کے شواہد پر ہوگی۔ مزید برآں مالی فائدہ اٹھانے تک اختیارات کے ناجائز استعمال کا کیس بھی نہیں بن سکے گا۔

مزید پڑھیں: وفاقی کابینہ نے نیب آرڈیننس 2019 میں ترمیم کی منظوری دیدی

یاد رہے وزارت قانون کی جانب سے وفاقی کابینہ کو بھیجی جانے والی نیب ترمیمی آرڈیننس کی سمری سرکولیشن کے ذریعے کابینہ نے منظوری کر لی گئی ہے۔ وزارت قانون نے سمری وفاقی کابینہ کو ارسال کی تھی۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment