وزیراعظم کا ممکنہ دورہ ڈیوس، اخراجات کی تفصیل سامنے آ گئی

فائل فوٹو

اسلام آباد: وزیر اعظم عمران خان کے دورہ ڈیوس پر اٹھنے والے ممکنہ اخراجات کی تفصیلات سامنے آ گئی ہیں۔ پاکستان تحریک انصاف کے چیف آرگنائزر سیف اللہ نیازی نے ان اخراجات کی مکمل تفصیلات ٹوئیٹر ہر شئیر کر دی ہیں۔

تفصیلات کے مطابق ٹوئیٹر پر اپنے پیغام میں سیف اللہ نیازی کا کہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان نے اپنے عمل سے ثابت کر دیا کہ دنیا میں ملک و قوم کی نمائندگی کیلئے ضروری نہیں کہ قومی خزانے سے اربوں لٹائے جائیں۔

دورہ ڈیوس کی ممکنہ تفصیلات بتاتے ہوئے انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کم ترین اخراجات میں 21 تا 23 جنوری 2020 ڈیوس کا دورہ مکمل کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ ورلڈ اکنامک فورم کے دورے پر وزیراعظم یوسف رضا گیلانی، نواز شریف اور شاہد خاقان عباسی سے کہیں کم اخراجات اٹھیں گے نواز شریف کا 2016 میں ورلڈ اکنامک فورم کے اجلاس میں شرکت کیلئے ڈیوس گئے تو قوم کو یہ دورہ 7 لاکھ 62 ہزار 199 ڈالرز میں پڑا۔ نون لیگ ہی کے شاہد خاقان عباسی بطور وزیراعظم 2018 میں ورلڈ اکنامک فورم گئے تو 5 لاکھ 61 ہزار 381 ڈالرز خرچ کر آئے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ 2012 میں پیپلز پارٹی کے یوسف رضا گیلانی کے دورے پر 4 لاکھ 59 ہزار 4 سو 51 روپے کا خطیر سرمایہ صرف ہوا۔

وزیر اعظم کے دورے کی ممکنہ تفصیلات بتاتے ہوئے انہوں نے کہا کہ 8 جنوری 2020 کو وزیراعظم عمران خان کا دورہ ڈیوس محض 68 ہزار ڈالرز میں مکمل ہوگا۔ اس سے پہلے وزیراعظم عمران خان کے دورہ واشنگٹن پر اٹھنے والے اخراجات بھی پیپلزپارٹی اور نون لیگ سے کہیں کم رہے۔ 01 جولائی 2019 میں وزیراعظم واشگنٹن گئے تو محض 67 ہزار  ڈالرز خرچ ہوئے۔ نواز شریف 2013 میں واشگنٹن گئے تو 5 لاکھ 49 ہزار 8 سو 53 ڈالرز خرچ کر آئے۔  اس کے مقابلے میں2009  میں زرداری کے دورہ واشنگٹن پر 7 لاکھ 52 ہزار 6 سو 88 ڈالرز کا خطیر سرمایہ خرچ ہوا۔

ان کا مزید کہنا تھا ستمبر 2019 وزیراعظم عمران خان کا دورہ نیویارک بھی نہایت کفایت شعاری اور کم ترین اخراجات میں مکمل ہوا۔ ان کے مطابق وزیراعظم عمران خان کے دورہ نیویارک پر 1 لاکھ 62 ہزار 5 سو 78 ڈالرز کی کم ترین لاگت آئی۔ اس کے مقابلے میں زرداری 2012 میں نیویارک گئے تو غریب قوم کی جیب سے 13 لاکھ 9 ہزار 6 سو 20 ڈالرز خرچ کرآئے۔

سیف اللہ نیازی کے مطابق 2016 میں نواز شریف نے نیویارک کا سفر کیا تو 11 لاکھ 13 ہزار 1 سو 42 ڈالرز پھونک ڈالے گئے جبکہ 2017 میں شاہد خاقان عباسی نے نیویارک کا قصد کیا تو 7 لاکھ 5 ہزار 19 ڈالرز خرچ کر ڈالے۔

یاد رہے پاکستان تحریک انصاف کی حکومت سادگی اور کفایت شعاری کا موقف لے کر برسرِ اقتدار آئی اور وزیر اعظم عمران خان نے اپنی تقریروں میں اپنے وزرا کو سادگی اپنانے کی ہدایت بھی کی۔

 

آئی ڈی: 2019/12/30/1761

متعلقہ خبریں

Leave a Comment