سپریم کورٹ کا سابق اسٹینو سے چھ سال کی تنخواہ وصول کرنے کا حکم


اسلام آباد: سپریم کورٹ نے سابق اسٹینو ٹائیپسٹ کابینہ محمد افضل سے چھ سال کی تنخواہ وصول کرنے کا حکم دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں چیف جسٹس گلزار احمد کی سربراہی میں دو رکنی بینچ نے کیس کی سماعت کی۔ سابق اسٹینو ٹائیپسٹ محمد افضل کے وکیل  نے موقف اپنایا کہ محمد افضل کو معطلی کے دوران آفس نہ آنے کا کہا گیا۔ چیف جسٹس گلزار احمد  نے ریمارکس  دئے کہ چھ سال تک آپ کا موکل غیر حاضر رہا۔ کیا حکومت سے ماہانہ وظیفہ لگا ہوا تھا؟  عدالت کا ہاتھ حکومت کی جیب میں نہیں ہے۔ کیا جو آئے اسے حکومت کی جیب سے پیسہ نکال کر دے دیں؟ چیف جسٹس نے ریمارکس دئیے کہ جب آفس میں حاضر نہیں تھے تو تنخواہ کس بات کی۔ قانون کے تحت غیر حاضری میں تنخواہ نہیں دی جا سکتی۔ عدالت نے فیڈرل سروسز ٹریبونل کا فیصلہ کالعدم قرار دے دیتے ہوئے محمد افضل کی فیڈرل سروسز ٹریبونل کے فیصلہ کیخلاف اپیل خارج کر دی ۔

 

آئی ڈی: 2019/12/31/1777

Leave A Reply

Your email address will not be published.