رواں مالی سال کے پہلے چھ ماہ میں 103 ارب روپے ٹیکس ریفنڈ کر دیا گیا

اسلام آباد: ایف بی آر کا کہنا ہے کہ رواں مالی سال کے پہلے چھ ماہ میں 103 ارب روپے کے ریفنڈ کیے گئے ہیں۔ ملک بھر میں بڑے بڑے ریٹیلرز کو پوائنٹ آف سیلز کے ساتھ منسلک کیا جا رہا ہے۔ شناختی کارڈ کی غلطی پر تاجروں کے خلاف جون تک کارروائی نہیں ہوگی۔

تفصیلات کے مطابق ایف بی آر کے ممبر پالیسی ڈاکٹر حامد عتقی سرور نے ممبر کسٹمز کے ہمراہ پریس کانفرنس ہوئے کہا کہ رواں مالی سال کے پہلے چھ ماہ میں 103 ارب روپے کے ریفنڈ کیے گئے ہیں جبکہ مقابلۃً گزشتہ مالی سال کے اسی عرصہ میں 36 ارب روپے کے ریفنڈ جاری کئے گئے۔ رواں سال 39 ارب روپے کے ٹیکس ری فنڈز کے کلیمز جمع ہوچکے ہیں جن میں سے 19 ارب روپے کے فارم پر 15 ارب روپے جاری ہوچکے ہیں۔ ایف بی آر ممبران نے کہا کہ رواں مالی سال کے پہلے چھ ماہ میں 2083 ارب روپے ٹیکس وصولی کی گئی ہے اور پہلے چھ ماہ میں ٹیکس وصولی میں 16 اعشاریہ 3 فیصد اضافہ ہوا ہے۔ درآمدات میں کمی سے 336 ارب روپے کا ٹیکس کم وصول ہوا ہے۔ ممبر آئی ٹی ایف بی آر نے بتایا کہ اس وقت تک 186 ریٹیلرز پوائنٹ آف سیل سسٹم سے منسلک ہو چکے ہیں۔ 40 ریٹیلرز کا سسٹم آن لائن ہو گیا ہے۔ اس وقت تک ٹیر ون میں 4 ہزار 700 دکانوں کو پوائنٹ آف سیل سسٹم سے منسلک کر دیا جائے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ پوائنٹ آف سیل بڑے شاپنگ مال میں لاگو کیا جا رہا ہے۔

 

آئی ڈی: 2019/12/31/2022 

متعلقہ خبریں

Leave a Comment