آرمی چیف کی مدتِ ملازمت؛ آرمی ایکٹ میں ترمیم منظور

اسلام آباد: وزیرِ اعظم کی زیرِ صدارت وفاقی کابینہ کے ہنگامی اجلاس میں آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی مدتِ ملازمت میں توسیع سے متعلق آرمی ایکٹ میں ترمیم کی منظوری دے دی گئی۔ وزیرِ اعظم عمران خان کی زیرِ صدارت وفاقی کابینہ کا ہنگامی اجلاس ہوا۔ جس میں ون پوائنٹ ایجنڈا زیرِ غور آیا۔  ترمیم میں آرمی چیف کی مدتِ ملازمت اور توسیع کا طریقۂ کار وضع کیا گیا ہے۔منظور ہونے والے بل کو اسمبلی میں پیش کیا جائے گا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ آرمی ایکٹ میں ترمیم کے ذریعے وفاقی کابینہ نے چاروں سروسز چیفس کی ریٹائرمنٹ کی عمر بڑھا دی ہے۔ اس ترمیم کا اطلاق چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی، آرمی چیف، چیف آف نیول سٹاف اور چیف آف ایئر سٹاف پر ہوگا۔ ترمیم کے بعد چاروں سروسز چیفس کی ریٹائرمنٹ کی مدت 60 سال سے بڑھا کر 64 سال کردی گئی ہے۔ ذرائع نے مزید بتایا کہ وفاقی کابینہ کی جانب سے چاروں سروسز چیفس کی ریٹائرمنٹ کی عمر میں اضافے کیلئے آرمی ایکٹ کے سیکشن 172 میں ترمیم کی گئی ہے۔ اسی ترمیم کی روشنی میں آرمی ایکٹ کے سروسز رولز کی دفعہ 155 میں ترمیم کی منظوری بھی دی گئی ہے۔

واضح رہے آج قومی اسمبلی کا اجلاس بھی شروع ہو رہا ہے جس سے قبل وزیر اعظم عمران خان نے وفاقی کابینہ کا ہنگامی اجلاس طلب کیا تھا۔

یاد رہے آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع کے حوالے سے سپریم کورٹ حکومت کو چھ ماہ کا وقت دے چکی ہے جس میں حکومت کو ضروری قانون سازی کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔ 

آئی ڈی: 2020/01/01/1995 

متعلقہ خبریں

Leave a Comment