آمدن سے زائد اثاثوں کی انکوائری؛ رانا ثنا اللہ نیب میں پیش

لاہور : لاہور ہائی کورٹ کی جانب سے ضمانت ملنے کے بعد رانا ثنا اللہ کو نیب نے طلب کیا ہے جس پر رانا ثنا اللہ نیب کی تین رکنی ٹیم کے سامنے پیش ہو گئے۔ رانا ثنا اللہ کو آمدن سے زائد اثاثوں کے کیس میں طلب کیا گیا تھا ۔  رانا ثنا اللہ کو آج 3 بجے نیب کے سامنے پیش ہونے کی ہدایت کی گئی تھی۔ 

دوسری طرف لیگی ترجمان مریم اورنگزیب نے نیب نوٹس کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ نئے مقدمے سے رانا ثنا اللہ 20 کلو ہیروئین کیس میں بری ہو گئے ہیں۔ منشیات کے جعلی کیس بے نقاب ہونے پر نیب نیازی گٹھ جوڑ حرکت میں آ گیا ہے۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ منشیات کیس کی سیاہی حکومت کے منہ سے اتری نہیں اور نیب نیازی گٹھ جوڑ نے اگلا انتظام شروع کر دیا۔ سیاسی مخالفین کیخلاف کچھ نہیں ملے تو اثاثہ جات تحقیقات کا بدنام زمانہ ہتھکنڈا استعمال کیا جاتا ہے۔

واضح رہے کہ سابق صوبائی وزیر قانون رانا ثنا اللہ کو یکم جولائی 2019 کو اے این ایف نے لاہور سے منشیات رکھنے کے مبینہ جرم میں گرفتار کیا۔ 26 دسمبر کو لاہور کی ہائی کورٹ نے رانا ثنا اللہ کو ضمانت پر رہا کرنے کا حکم دے دیا۔ رانا ثنا اللہ 176 دن تک جیل میں قید رہے۔

ضمانت کے بعد اپنی پریس کانفرنس میں رانا ثنا اللہ نے دعوی کیا کہ ان پر جھوٹا کیس بنایا گیا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اگر ان پر کیس اس لیے بنایا گیا کہ وہ نواز شریف کے ساتھ کھڑے تھے، تو کیس سے پہلے وہ 100 فیصد نواز شریف اور اپنی پارٹی کے ساتھ کھڑے تھے، تو اب وہ ایک ہزار فیصد اپنی جماعت کے ساتھ کھڑے ہیں۔

 

آئی ڈی: 2020/01/2/2077 

متعلقہ خبریں

Leave a Comment