صدر ٹرمپ کی ایران کو وارننگ

امریکہ کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے متنبہ کیا ہے کہ اگر ایران نے کسی بھی امریکی شہری یا تنصیب کو نشانہ بنایا تو امریکہ ’بہت تیزی اور شدت سے‘ ایسی 52 اعلی سطحی تنصیبات اور مقامات پر حملہ کرے گا جو ایران اور اس کی ثقافت کے لیے نہایت اہم ہیں۔

امریکی صدر کا کہنا ہے کہ یہ 52 اہداف پہلے ہی نشانے پر لیے جا چکے ہیں اور 52 کا ہندسہ ان 52 امریکی شہریوں کی مناسبت سے چنا گیا ہے جنھیں کئی برس قبل ایران نے یرغمال بنایا تھا۔

ڈونلڈ ٹرمپ نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر تین سلسلہ وار ٹویٹس کے ذریعے ایران کو انتہائی سخت پیغام دیا۔ انہوں نے کہا کہ "گذشتہ کئی برسوں سے ایران ایک مسئلے کے سوا کچھ بھی نہیں۔ امریکہ مزید دھمکیاں سننا نہیں چاہتا۔”

یاد رہے جمعے کو امریکی افواج کی جانب سے عراق کے دارالحکومت بغداد میں کیے گئے ایک ڈرون حملے میں ایران کے پاسدارانِ انقلاب کی قدس فورس کے سربراہ جنرل قاسم سلیمانی ہلاک ہو گئے تھے۔ ان کی ہلاکت کے بعد ایرانی رہنماؤں کی جانب سے اس ہلاکت کا بدلہ لینے کا اعلان کیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ 1979 کے اواخر میں تہران میں موجود امریکہ سفارت خانے میں 52 امریکی شہریوں کو یرغمال بنایا گیا تھا۔ یہ یرغمالی ایک سال سے زائد عرصے تک یرغمال بنا کر رکھے گئے تھے۔

آئی ڈی: 2020/01/05/2336 

متعلقہ خبریں

Leave a Comment