اقتصادی رابطہ کمیٹی کا اجلاس، اہم فیصلے کر لیے گئے

اسلام آباد: اقتصادی رابطہ کمیٹی نے تاپی گیس پائپ لائن منصوبے کے لیے پرائس مذاکراتی کمیٹی تشکیل دے دی۔ رابطہ کمیٹی نے واپڈا کو 17 ارب 50 کروڑ روپے کا قرضہ حاصل کرنے کی منظوری بھی دے دی۔ اس کے علاوہ پاکستان اسٹیل ملز کو گیس بلوں کی ادائیگی کیلئے تین ارب روپے کے فنڈز جاری کرنے پر کمیٹی قائم کردی گئی۔ وزارت خزانہ کو پی ایس او کی مالی حالت ٹھیک کرنے کی ہدایت کردی گئی۔
تفصیلات کے مطابق مشیر خزانہ حفیظ شیخ کی زیر صدارت اقتصادی رابطہ کمیٹی کا اجلاس اسلام آباد میں ہوا۔ ای سی سی نے تاپی گیس پائپ لائن منصوبے کے لیے پرائس مذاکراتی کمیٹی تشکیل دینے کی منظوری دے دی گئی۔ مذکورہ کمیٹی کی سربراہی سیکریٹری پیٹرولیم کریں گے۔ ای سی سی نے وزارت خزانہ کو پی ایس او کی مالی حالت ٹھیک کرنے کی ہدایت کر دی۔ ای سی سی کو بتایا گیا کہ ایکسچینج ریٹ میں کمی کے باعث پی ایس او کو 28 ارب روپے کا نقصان ہوچکا ہے۔ اس حوالے سے ہدایت کی گئی کہ پی ایس او کی مالی حالت کو بہتر کرنے کے لیے مختلف آپشنز کا جائزہ لیا جائے۔ اجلاس میں واپڈا کو 17 ارب 50 کروڑ روپے کا قرضہ حاصل کرنے کی منظوری دے دی گئی۔ واپڈا یہ قرضہ اپنے واجبات کی ادائیگی کے لیے حاصل کرے گا۔
مزید بر آں ای سی سی کے اجلاس میں پاکستان ٹورزم ڈویلپمننٹ اینڈومینٹ فنڈ کیلئے ایک ارب روپے کی ضمنی گرانٹ جاری کرنے کی منظوری دے دی گئی۔ ای سی سی نے پاکستان ٹوارزم ڈویلپمنٹ کو ہدایت کی کہ سیاحت سے متعلق ملک کا بہتر تشخص اجاگر کرنے کے حوالے سے حکمت عملی تیار کرے۔ یوٹیلیٹی اسٹورز کارپوریشن کے 5 ارب روپے قرضے کی حکومتی ضمانت میں توسیع کی سمری بھی منظورکر لی گئی ہے۔ پاکستان اسٹیل ملز کو سوئی سدرن کو گیس بلوں کی ادائیگی کیلئے تین ارب روپے کے فنڈز جاری کرنے کے معاملے پر کمیٹی قائم کر دی گئی ہے۔ ای سی سی نے رزک گیس فیلڈ سے سوئی سدرن کو 16 ایم ایم سی ایف ڈی گیس فراہم کرنے کی منظوری دے دی۔ اجلاس کو یہ بھی بتایا گیا کہ رزک گیس فیلڈ 3 سے 9 سے 10 ایم سی ایف ڈی گیس کی فراہمی کا امکان ہے۔

 

آئی ڈی: 2020/01/08/2808 

متعلقہ خبریں

Leave a Comment