یوکرائن کا مسافر طیارہ ایران میں گر کر تباہ

یوکرائن کا مسافر طیارہ ایران کے دارالحکومت تہران میں گر کر تباہ ہو گیا ہے جس میں لگ بھگ 180 مسافر سوار تھے۔

ایران کے سرکاری ٹی وی کے مطابق یوکرائن کے مسافر طیارہ بوئنگ 737 نے تہران کے امام خمینی ایئر پورٹ سے پرواز بھری تھی کہ دارالحکومت تہران کے جنوب مغربی علاقے پارند کے قریب گر کر تباہ ہو گیا ۔مسافر طیارے میں عملے سمیت 180 افراد سوار تھے۔ اب تک موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق اس حادثے میں 176افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

ابتدائی طور پر طیارہ حادثے کی وجہ تکنیکی خرابی بتائی جاتی ہے۔ سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو بھی وائرل ہے جس میں یوکرائن کے طیارے کو فضا میں بلند ہونے کے بعد اس میں لگنے والی آگ دیکھی جا سکتی ہے۔

طیاروں کی آمد و رفت پر نظر رکھنے والی ویب سائٹ’فلائٹ ریڈار 24’کے مطابق یوکرائن ایئر لائن کی فلائٹ 752 کو تہران کے مقامی وقت کے مطابق بدھ کی صبح پانچ بج کر 15 منٹ پر اڑنا تھا جس کی آخری منزل یوکرائن کے دارالحکومت کیو کا بورسپل انٹرنیشنل ایئر پورٹ تھا۔

ایران میں یوکرائن کے سفارت خانے نے ایک تازہ بیان جاری کرتے ہوئے اپنے پرانے جاری کردہ بیان سے’انجن کی خرابی‘ کا جملہ نکال دیا ہے۔ یوکرائنی سفارتخانے کے مطابق پچھلا بیان سرکاری نہیں تھا۔ سفارتخانے نے صبح جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا تھا کہ  طیارہ انجن فیل ہونے کے باعث تباہ ہوا۔ دوسری جانب یوکرائن کی سیکیورٹی کونسل کی جانب سے جانب سے جاری کردہ ایک بیان کے مطابق اس حادثے میں عملے سمیت 11 افراد ہلاک ہوئے ہیں۔ اس حادثے کے بعد یوکرائن نے غیر معینہ مدت کے لیے تہران کی جانب پروازوں پر پابندی عائد کر دی ہے۔

یاد رہے کہ ایک ماہ کے دوران یہ دوسرا بڑا فضائی حادثہ ہے۔ اس سے قبل 27 دسمبر کو قازقستان کی ایئر لائنز ‘بیک ایئر’ کا طیارہ الماتی شہر کے قریب گر کر تباہ ہوا تھا جس میں عملے سمیت 99 افراد سوار تھے۔ مذکورہ حادثے میں جہاز گر کر تباہ ہو گیا تھا۔ تاہم حادثے میں 14 افراد ہلاک اور دیگر زخمی ہوئے تھے۔

دوسری طرف ایران کے امریکی فوجی اڈوں پر میزائلوں کے حملے کے بعد امریکا نے اپنے سول جہازوں پر ایران اور عراق کی فضائی حدود استعمال کرنے پر پابندی لگا دی ہے۔

 

آئی ڈی: 2020/01/08/2616 

متعلقہ خبریں

Leave a Comment