میزائل حملوں کا مقصد امریکی فوجیوں کو ہلاک کرنا نہیں تھا: پاسدران انقلاب

پاہِ پاسداران انقلاب ایران کی فضائیہ کے کمانڈر جنرل امیر علی حاجی زادہ نے عراق میں امریکا کے دو فوجی اڈوں پر بدھ کو علی الصباح میزائل حملوں کے بارے میں ایک نیا دعویٰ کردیا ہے۔ان کا کہنا ہے کہ ان کا مقصد امریکی فوجیوں کو ہلاک کرنا نہیں بلکہ امریکا کی ’’فوجی مشن‘‘ کو نقصان پہنچانا تھا۔

ایران کی سرکاری خبررساں ایجنسی فارس نے جمعرات کو حاجی زادہ کا یہ بیان نقل کیا ہے:’’ہم اس آپریشن میں کسی کو ہلاک نہیں کرنا چاہتے تھے،اگرچہ اس میں دسیوں ہلاک اور زخمی ہوئے ہیں۔‘‘

انھوں نے دعویٰ کیا ہے کہ ’’اگر ہم کسی کو ہلاک کرنا چاہتے تو پھر ہم اس آپریشن کو ایک اور انداز میں ڈیزائن کرتے جس سے پہلے ہی ہلے میں پانچ سو(امریکی) ہلاک ہوجاتے۔اگر وہ اس کا جواب دیتے تو دوسرے مرحلے میں اڑتالیس گھنٹے کے اندر مزید چار سے پانچ ہزار(امریکی) ہلاک ہوجاتے۔‘‘

پاسداران انقلاب کی فضائیہ کے سربراہ کا کہنا تھا کہ ’’القدس فورس کے کمانڈر قاسم سلیمانی کی ہلاکت کا مناسب ردعمل یہ ہوسکتا ہے کہ خطے سے امریکی فوجیوں کو نکال باہر کیا جائے۔‘‘

مزید پڑھیں: ایران نے حملے کے بعد جوابی کارروائی ختم کرنے کا اعلان کر دیا

انھوں نے یہ بھی دعویٰ کیا ہے کہ ایران کے سیکڑوں میزائل تیاری کی حالت میں ہیں۔اس نے جب عراق میں امریکی فوجی اڈوں پر میزائل داغے تھے تو ساتھ سائبر حملے بھی کیے تھے اور ان سے امریکا کے طیاروں اور ڈرون کے نیوی گیشن سسٹمز کو ناکارہ بنا دیا تھا۔

ایران کے سرکاری ٹیلی ویژن کے مطابق حاجی زادہ کا کہنا تھا کہ ’’یہ میزائل حملے تو خطے بھر میں سلسلہ وار حملوں کا نقطہ آغاز ہیں۔‘‘

یاد رہے امریکہ نے تین جنوری کو عراق کے دارالحکومت بغداد کے انٹرنیشنل ایئرپورٹ کے قریب ڈرون حملے میں ایرانی کمانڈر جنرل قاسم سلیمانی اور ایرانی ملیشیا کتائب حزب اللہ کے لیڈر مہدی المھندس کو نشانہ بنایا تھا۔ ایرانی سپریم لیڈر آیت اللہ خامنہ ای نے جنرل سلیمانی کی ہلاکت کا بدلہ لینے کا اعلان کیا تھا۔ بدھ کے روز ایران نے عراق میں موجود فوجی اڈوں پر درجن سے زائد میزائل داغے تھے۔

ایران نے میزائل حملے کے بعد یہ دعویٰ کیا تھا کہ اس حملے میں اسی لوگ ہلاک ہوئے ہیں دوسری طرف امریکی صدر ٹرمپ نے ایک خطاب میں کہا کہ تمام امریکی فوجی محفوظ ہیں، کسی بھی عراقی یا امریکی فوجی کو نقصان نہیں پہنچا ۔

 

آئی ڈی: 2020/01/09/2837

متعلقہ خبریں

Leave a Comment