پی آئی اے کا طیارہ برف میں پھنس گیا

کوئٹہ: پی آئی اے کا طیارہ کوئٹہ میں ڈی آئسنگ کا سازوسامان نہ ہونے کی وجہ سے پھنس گیا۔

تفصیلات کے مطابق جدہ سے کوئٹہ آنے والی فلائٹ اتری تو برف باری شروع ہوگئی۔ ترجمان پی آئی اے  عبداللہ خان کے مطابق ایسے موسم میں ڈی ائسنگ (جہاز اور انجن پر سے برف اتارنا) کی ضرورت پڑتی ہے جو کہ کوئٹہ ائیرپورٹ پر مہیا نہیں کی گئی۔ ترجمان کے مطابق یہ سہولت مہیا کرنا ائیرپورٹ یعنی سول ایوایشن کا کام ہے۔ طیارہ پھنسنے سے نقصان علیحدہ اور مسافروں کو پریشانی علیحدہ ہوتی ہے، جبکہ ساتھ ہی پی آئی اے کا دیگر شیڈول شدید متاثر ہوتا ہے۔

پرواز میں تعطل پیش آنے کی وجہ سے مسافروں کو ہوٹل فراہم کر دیئے گئے ہیں اور پی آئی اے ان کو صورتحال سے آگاہ کر رہی ہے۔ برف اور ضروری سامان اور کیمیکلز کی کوئٹہ ائیرپورٹ پر غیر موجودگی کے باعث پی آئی اے نے دیگر پروازیں منسوخ کردیں ۔ پی کے 325/326 اسلام آباد-کوئٹہ- اسلام آباد منسوخ کر دی گئی۔ پی کے 310/311 کرچی-کوئٹہ-کراچی منسوخ کردی گئی۔ پی کے 8363 کوئٹہ-کراچی بھی منسوخ کی گئی ہے۔

ترجمان پی آئی اے کا کہنا ہے کہ موسم کی صورتحال بہتر ہوتے ہی پروازیں بحال کردی جائیں گی۔ مسافروں کو ہونے والی دشواری کے لئے معذرت خواہ ہیں تاہم ہی صورتحال ہمارے اختیار سے باہر ہیں۔ پی آئی اے کا عملہ اور کال سنٹر مستعد ہے ہمارے مسافر رابطہ کر کے رہنمائی حاصل کر سکتے ہیں۔

دوسری جانب سول ایوی ایشن اتھارٹی (سی اے اے) نے انکشاف کیا ہے کہ  ملک کے کسی بھی ہوائی اڈے پر طیاروں کے پرو ں پر جمی برف صاف کرنے کی صلاحیت نہیں ہے۔ سی اے اے کے مطابق طیاروں کے پروں پر جمی برف صاف کرنے کے لیے خصوصی کیمیکل، آلات اور سرٹیفکیٹ درکار ہوتا ہے، جو اس وقت موجود نہیں ہے۔ سی اے اے کا مزید کہنا ہے کہ طیاروں کے پروں سے برف ہٹانے کی صلاحیت اسکردو کے ہوائی اڈے پر بھی موجود نہیں ہے۔

سی اے اے کے مطابق قوانین کے تحت طیاروں کے پروں سے برف صاف کرنے کی ذمہ داری ائیرلائن پر عائد ہوتی ہے۔ سی اے اے صرف ہوائی اڈوں کے رن وے اور ٹیکسی وے پر سے برف ہٹانے کو یقینی بناتی ہے۔

 

آئی ڈی: 2020/01/13/3131 

متعلقہ خبریں

Leave a Comment