ارفع کریم رندھاوا کو ہم سے بچھڑے 8 برس بیت گئے


لاہور: پاکستان کی ہونہار بیٹی ارفع کریم کو ہم سے بچھڑے 8 برس بیت گئے۔ 9 سال کی عمر میں مائیکرو سافٹ سرٹیفائیڈ کا اعزاز اپنے نام کرنے والی ارفع کریم رندھاوا کو ہم سے بچھڑے 8 برس بیت گئے۔

وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے پیغام دیا کہ  ارفع کریم  نے انفارمیشن ٹیکنالوجی کے میدان میں غیر معمولی کامیابیاں حاصل کیں، یہی دیکھتے ہوئے حکومت پنجاب نے انفارمیشن ٹیکنالوجی کے فروغ کے لیے خاطرخواہ اقدامات کئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کہ ارفع کریم نے اپنی خداداد صلاحیتوں کے ذریعے پاکستان کا نام دنیا بھر میں روشن کیا۔ پاکستان کی ہونہار اور ذہین بیٹی ارفع  آج بھی ہمارے دلوں میں زندہ ہے۔

ارفع کریم کون تھیں؟

1995 میں فیصل آباد کے گاؤں چک 2 جے بی رام دیوالی میں پیدا ہونے والی ارفع کریم وہ پہلی بچی تھیں جنہوں نے آئی ٹی کی دنیا میں نہ صرف اپنا بلکہ ملک کا نام دنیا بھر میں روشناس کیا۔ ارفع کریم نے صرف 9 برس کی عمر میں مائیکرو سافٹ سرٹیفائیڈ پروفیشنل امتحان پاس کر کے انفارمیشن ٹیکنالوجی کی دنیا میں تہلکہ مچایا۔

مائیکرو سافٹ کارپوریشن کی جانب سے ارفع کو 2005 میں مائیکرو سافٹ سرٹیفائیڈ ایپلی کیشن سرٹیفکٹ سے نوازا گیا جس کے بعد مائیکرو سافٹ کمپنی کے مالک بل گیٹس نے ارفع کریم کو خصوصی طور پر امریکا بلا کر ان سے ملاقات بھی کی۔ ارفع کریم نے کم عمری میں ہی فاطمہ جناح گولڈ میڈل، سلام پاکستان یوتھ ایوارڈ، پرائیڈ آف پرفارمنس ایوارڈ سمیت کئی اعزازات حاصل کیے۔

دنیا کی کم عمر ترین آئی ٹی مائیکرو سافٹ سرٹیفائیڈ ارفع کریم 14 جنوری 2012 کو صرف 16 سال کی عمر میں لاہور میں انتقال کرگئیں۔ ارفع کریم کے قابل ستائش اور عظیم کارنامے پر پنجاب حکومت کی جانب سے آئی ٹی ٹاور کے نام کو ارفع کریم کے نام سے منسوب کیا گیا۔

 

آئی ڈی: 2020/01/14/3221

Leave A Reply

Your email address will not be published.