مسلم لیگ نے کے ایم این اے کی مبینہ بدتمیزی، سی ڈی اے نے کام چھوڑ دیا

اسلام آباد: لیگی ایم این اے کی طرف سے ڈائریکٹر پارلیمنٹ لاجز محمد طاہر کو مبینہ طور پر تھپڑ مارے جانے کے واقعے کے خلاف پارلیمنٹ لاجز میں عملے کے احتجاجی مظاہرہ کیا۔

تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز لیگی ایم این اے کی طرف سے ڈائریکٹر پارلیمنٹ لاجز محمد طاہر کوان کے دفتر میں  تھپڑ مارنے کا واقعہ پیش آیا۔ اس واقعے کے خلاف پارلیمنٹ لاجز، ایم این اے ہاسٹل میں آج سی ڈی اے انکوائریز میں کام بند کردیا گیا۔ سی ڈی اے اور قومی اسمبلی حکام کو احتجاج اور ہڑتال سے آگاہ کردیا گیا۔

گزشتہ روز پارلیمنٹ لاجز میں اراکین اسمبلی کا سی ڈی اے عملے سے ایک اور جھگڑا سامنے آیا۔ مبینہ طور پر فون نہ سننے پر مسلم لیگ ن کے ایم این اے اظہر قیوم ناہرا نے ڈائریکٹر پارلیمنٹ لاجز محمد طاہر کو گریبان سے پکڑ لیا۔ ڈائریکٹر پارلیمنٹ لاجز اور عملہ نے اس واقعے کے خلاف تھانہ سیکرٹریٹ میں درخواست جمع کرادی۔

دوسری جانب ڈائریکٹر پارلیمنٹ لاجز کا کہنا ہے کہ لیگی ایم این اے چند افراد کے ساتھ میرے کمرے میں داخل ہوئے۔ مجھے اظہر قیوم ناہرا نے کمرے میں داخل ہوتے ہی کہا کہ میرا فون نہ اٹھانے کی جرات کیسے  ہوئی۔ انہوں نے میری گزارش کے باوجود بھی مجھے گریبان سے پکڑ کر گھسیٹا اور دھمکیاں دیں۔ جبکہ ، ایم این اے اظہر قیوم ناہرا نے موقف اختیار کیا کہ  کہ ایسی کوئی بات نہیں ہوئی۔ میرے ساتھ بدتمیزی کی گئی ہے، جس کے حوالے سے میں نے قومی اسمبلی میں تحریک استحقاق جمع کرادی ہے۔

 

آئی ڈی: 2020/01/14/3207 

متعلقہ خبریں

Leave a Comment