’گرفتار ہونے والا شخص کب کہتا ہے کہ میں گناہ گار ہوں‘

اسلام آباد: ڈی جی اے این ایف میجر جنرل عارف ملک نے میڈیا سے گفتگو میں کہا کہ کیا کوئی گرفتار ہونے والا شخص کہتا ہے کہ میں گناہ گار ہوں۔ معاملہ عدالت میں ہے۔ رانا ثنا اللہ عدالت میں ثبوت دیں۔

تفصیلات کے مطابق قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی نارکوٹکس کنٹرول کا اجلاس صلاح الدین ایوبی کی زیرصدارت ہوا۔ اجلاس کے بعد ڈی جی اے این ایف میجر جنرل عارف ملک نے میڈیا سے گفتگو میں کہا کہ سرِعام قتل کرنے والے بندے نے کبھی کہا میں مجرم ہوں؟ کوئی گرفتار ہونے والے شخص نہیں کہتا کہ میں گناہ گار ہوں، مجھے سزا دی جائے۔  جب ان سے سوال کیا گیا کہ آپ حلف دینے کیلئے تیار ہیں کہ رانا ثنا اللہ کیخلاف کیس درست بنا تو انہوں نے جواب دیا کہ اگر معاملات حلف سے چلنے ہیں تو عدالتوں کو تالا لگا دیں۔

ڈی جی اے این ایف نے کہا کہ اگر معاملات حلف سے چلنے ہیں تو عدالتوں کا فائدہ نہیں۔ ایک نےبھی حلف اٹھا لیا اوردوسرے نے بھی،تو پھر معاملے کی لاٹری ڈال دیں، تو یوں تو لاٹری میں سے نکل آئے گا کون ذمہ دار ہے کون گناہ گارہے۔

اجلاس میں کمیٹی کو بتایا گیا کہ پاکستان میں ڈرگ استعمال کرنے والوں کا ٹرینڈ تبدیل ہو گیا، مگر قوانین وہی پرانے ہی ہیں، جس کو تبدیل کرنے کی ضرورت ہے۔ ممبر کمیٹی عظمی ریاض نے کمیٹی کو تجویز دی کہ اسکول، کالجز میں داخلے کے وقت طلبا کا میڈیکل چیک اپ کروایا جائے۔

 

آئی ڈی: 2020/01/15/3554

متعلقہ خبریں

Leave a Comment