بے نظیر انکم سپورٹ سے عیش کرنے والے سرکاری افسران کے گرد گھیرا مزید تنگ

اسلام آباد: بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام سے جعلسازی کے ذریعے رقم بٹورنے والے افسران کے گرد گھیرا مزید تنگ کر دیا گیا ہے۔ حکومت نے دھوکے باز افسران کو نوکری سے برطرف کرنے کے لیے شوکاز نوٹسزجاری کر دیئے۔ بیگمات کے نام پر 9 سال تک وظائف لینے والے افسران کو 10 روز کی مہلت دی گئی ہے۔ چیئرمین بی آئی ایس پی ثانیہ نشتر نے کہا ہے کہ ایک لاکھ 40 ہزار سرکاری ملازمین وظیفہ وصول کررہے تھے۔

تفصیلات کے مطابق بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام سے جعلسازی کے ذریعے وظائف لینے والے سرکاری افسران شکنجے میں آگئے۔ حکومت نے رقم وصول کرنے والے تمام افسران کےخلاف باقاعدہ کارروائی  کا آغاز کردیا۔ بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام سے وظائف حاصل کرنے والے افسران کو نوکری سے برطرف کرنے کے لیے شوکاز نوٹسز جاری کر دیئے گئے۔ اس ضمن میں تسلی بخش جواب نہ دینے پر ملازمتوں سے بر طرفی عمل میں لائی جائے گی۔

اپنی بیگمات کے نام پر 9 سال تک وظائف لینے والے افسران کو 10 روزکی مہلت دی گئی ہے۔ یاد رہے حال ہی میں انکشاف کیا گیا تھا کہ بے نظیر انکم سپورٹ سے دھوکہ دہی سے فائدہ اٹھانے والوں میں گریڈ 17 سے 21 کے افسران شامل ہیں۔

بینظیرانکم سپورٹ پروگرام کی چیئرپرسن ثانیہ نشتر کے مطابق ریلویز، پاکستان پوسٹ اور بی آئی ایس پی وفاقی اورصوبائی محکموں کے ایک لاکھ 40 ہزار سرکاری ملازمین پروگرام میں شامل تھے۔ ثانیہ نشتر کا کہنا تھا کہ وزیراعظم کے حکم کے مطابق ان سرکاری ملازمین کا نام بہت جلد پبلک کردیا جائے گا۔

آئی ڈی: 2020/01/17/3686

متعلقہ خبریں

Leave a Comment