چینی کی قیمت بڑھنا خان صاحب کے حکم پر دوستوں کی کاروائی اور ڈاکہ: مریم اورنگزیب


لاہور: مسلم لیگ ن  نے چینی اور آٹا بحران کا  ذمہ دار  جہانگیر ترین اور خسرو بختیارکو ذمہ دار قرار دیتے ہوئے سپریم کورٹ سے معاملے کے ازخود نوٹس کامطالبہ کر دیا ہے۔ ترجمان مسلم لیگ ن مریم اورنگزیب کہتی ہیں کہ چینی کی قیمت کنٹرول کرنے کی ذمہ داری جہانگیر ترین اور خسرو بختیار کو دینا بلے کو دودھ کی رکھوالی پر بٹھانے کے مترادف ہے۔

اپنے ایک بیان میں مسلم لیگ ن کی ترجمان مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ ملکی ضرورت کی 40 فیصد  چینی کی پیداوار جہانگیر ترین اور خسرو بختیار کے کنٹرول میں  ہے اور وزیراعظم عمران خان نے پورے ملک  میں آٹے اور چینی  کا کنٹرول  بھی انہی دونوں کو دے رکھا ہے۔ چینی کی قیمت کنٹرول کرنے کی ذمہ داری جہانگیر ترین اور خسرو بختیار کو سونپنا مفادات کے ٹکراو کی بدترین مثال ہے۔

انہوں نے کہا کہ  گنے کی فصل زیادہ ہونے کے باوجود چینی کی قیمت میں اضافہ منافع خوری اور سرکاری سرپرستی میں ڈکیتی ہے۔ ملک کی تاریخ میں پہلی بار سیزن میں چینی کی قیمت بڑھنا عمران صاحب کے حکم پر دوستوں کی کاروائی اور ڈاکہ ہے۔ سلسلہ اسی طرح چلتا رہا تو چینی کی قیمت 100 روپے فی کلوگرام تک ہونے کا خطرہ ہے۔ مریم اورنگزیب نے چیف جسٹس سپریم کورٹ سے سارے معاملے کے از خود نوٹس کا مطالبہ کیا ہے۔

 

آئی ڈی: 2020/01/23/3997

Leave A Reply

Your email address will not be published.