2019 میں کہاں کتنی کرپشن ہوئی، رپورٹ جاری کر دی گئی


اسلام آباد: 2019 میں کرپشن سے متعلق ٹرانسپیرنسی انٹرنیشنل کی رپورٹ جاری کر دی گئی ہے۔ کرپشن انڈیکس میں پاکستان ایک درجے اوپر آ گیا ہے۔  2018 کی کرپشن پرسیپشن انڈیکس میں پاکستان کااسکور 33 تھا جبکہ 2109 میں یہ 32 ہو گیا۔

رپورٹ کے مطابق 2018 کی نسبت 2019 کےدوران پاکستان میں کرپشن بڑھ گئی۔رپورٹ میں ذکر کیا گیا ہے کہ نیب نے بدعنوان عناصر سے 153ارب روپے ریکور کیے۔ رپورٹ میں موجودہ چیئرمین نیب جاوید اقبال کی زیرقیادت نیب کی کارکردگی بہتر رہی۔

32 اسکور حاصل کرنے پر پاکستان کا کرپشن پرسیپشن انڈیکس 3 درجے بڑھ کر 117 سے 120 ویں درجے پر چلا گیا، یوں 180 ممالک میں سے پاکستان کا نمبر 120 واں رہا۔

ٹرانسپیرنسی انٹرنیشنل نے کرپشن روکنے کیلئے سفارشات بھی پیش کر دیں ۔ ان سفارشات میں سیاسی فنانسنگ کو کنٹرول کرنا، سیاست میں بڑے پیسے اور اثر و رسوخ کو قابو کرنا، بجٹ اور عوامی سہولتوں کو ذاتی مقاصد اور مفاد رکھنے والوں کے ہاتھوں میں نہ دینے کی تجویز شامل ہیں۔ اس کے علاوہ مفادات کے تصادم اور بھرتیوں کے طریقے پر قابو پانا، لابیز کو ریگولیٹ کرنا، الیکٹورل کی ساکھ کو مضبوط کرنا۔ اور غلط تشہیر پر پابندی لگانے کی بھی سفارش کر دی گئی۔

مزید برآں ٹرانسپیرنسی انٹرنیشنل نے شہریوں کو بااختیار بنانے، سماجی کارکن، نشاندہی کرنے والوں اور جرنلسٹ کو تحفظ دینے، اور کرپشن روکنے کے لیے چیک اینڈ بیلنس اور اختیارات کو علیحدہ کرنے کی بھی تجویز دے دی۔

رپورٹ میں امریکا کا اسکور 2، برطانیہ، فرانس کا 4 اور کینیڈا کا انسداد بدعنوانی اسکور 4 درجہ کم ہو گیا۔ امریکا، برطانیہ،فرانس اور کینیڈا کا انسداد بدعنوانی کا اسکور بھی کم رہا۔ جی 7 کے ترقی یافتہ ممالک بھی انسداد بدعنوانی کی کوششوں میں پھنسے ہوئے ہیں۔

2019 میں پہلا نمبر حاصل کرنے والے ڈنمارک کا اسکور بھی 1 پوائنٹ کم ہو کر 87 رہا۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ زیادہ تر ممالک کی کرپشن کم کرنے میں کارکردگی بہتر نہیں رہی۔

 

آئی ڈی: 2020/01/23/4011

Leave A Reply

Your email address will not be published.