ٹڈی دل کے خاتمے میں ساتھ دیں، وفاقی حکومت نے پاک فوج کی مدد مانگ لی

اسلام آباد : وفاقی حکومت نے بھارتی ٹڈی دل کے فصلوں پر حملے کی روک تھام کے لئے پاک فوج سے مدد مانگ لی ہے۔ ٹڈی دل کے خاتمے کے لئے فصلوں پر سپرے کے لئے جہاز کرائے پر لینے کی تجویز بھی زیر غو ر ہے جس کی حتمی منظوری وزیراعظم دیں گے۔

تفصیلات کے مطابق بارشوں کی وجہ سے ٹڈی دل کے خاتمے میں مشکلات بڑھ گی ۔ وزارت تحفظ خوراک کے ذرائع نے بتایا ہے کہ ٹڈی دل کے حملے کا خدشہ لاحق ہے جس کے حوالے سے وزارت میں اہم اجلاس منعقد ہو رہے ہیں ۔ ٹڈی دل تین لاکھ سکوائر کلومیٹر پر پھیلی ہوئی ہے، جس کے خاتمے کے لئے تمام اسٹیک ہولڈرز سے میٹنگ کی گی ہے۔ ٹڈی دل کا بہار اور گرمیوں میں حملے کا خطرہ ہوتا ہے، تاہم سبزہ اور نمی ٹڈی دل کی زندہ رہنے میں مدد دیتی ہے۔

ذرائع کے مطابق ٹڈی دل بھارت جا کر واپس آئی ہے۔ اس سے بھارت میں 13 اضلاع میں شدید نقصان ہو ا ہے۔ سرحدی علاقوں میں دونوں جانب سے آئیر سپرے نہ ہونے کی وجہ سے وہ علاقہ ٹڈی دل کے لئے ہیچری بن گیا ہے او روہاں ٹڈی دل کی پرورش ہو رہی ہے۔ بارشوں کی وجہ سے ٹڈی دل میں اضافہ ہو رہا ہے۔ تاہم موسم ٹھنڈا اور خشک ہو تو اس کے جلد خاتمے میں مدد ملے گی۔

ذرائع کے مطابق وزارت نے مدد کے لئے پاک فوج سمیت دیگر تمام اداروں کو مدد کی درخواست کی ہے۔ پاک فوج کو درخواست کی گئی ہے کہ ٹڈی دل کے سپرے کے حوالے سے مدد کریں اور اس کی سرویلینس میں بھی مدد دیں۔ ذرائع کے مطابق ٹڈی دل کے خاتمے کے لئے کئے جانے والے سپرے میں انتہائی مہارت درکار ہوتی ہے کیونکہ اگر سپرے کے حوالے سے تھوڑی سی بھی لاپرواہی ہو جائے تو اس سے پالتو جانوروں کے نقصان کا بھی خدشہ ہو جاتا ہے۔

مزید پڑھیں: فصلوں پر اسپرے کرنے والے 20 جہاز ناکارہ ہونے کا انکشاف

 ذرائع کے مطابق صوبوں سے ٹڈی دل سے ہونے والے نقصان کے تخمینے کے لئے تین خط لکھے گئے ہیں، مگر ان کی جانب سے جواب نہیں دیا گیا اور گندم کی فصل کو ٹڈی دل سے کسی نقصان کی اطلاع نہیں ملی۔ تاہم اس حوالے سے صوبوں کو الرٹ رہنے اور حملے کی صورت میں فوری اطلاع دینے کے لئے خط لکھ دیئے گئے ہیں۔ ذرائع کے مطابق ٹڈی دل کے حملے سے بچنے کے لئے اقدامات کرنے کے لئے وزیراعظم کی سربراہی میں شراکت داروں کے اجلاس منعقد کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے جس میں وزیراعظم کو ٹڈی دل کے حملے کے خدشات کے حوالے سے بریفنگ دی جائے گی۔ اجلاس میں صوبوں کے نمائندوں کو بھی بلایا جائے گا۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ بریفنگ میں بتایا جائے گا کہ وزارت تحفظ خوراک کی جانب سے ٹڈی دل کے حملے اور بچاو کے لئے سد باب کرنے کے لئے 80 کروڑ روپے کے فنڈز مانگے گئے تھے جس کے جواب میں حکومت نے 45 کروڑ 90 لاکھ روپے دینے کی یقین دہانی کروائی اور اب تک 10 کروڑ روپے جاری کئے گئے ہیں۔

واضح رہے کہ ایک لاکھ لیٹر دوائی کے لئے 11 کروڑ روپے درکار ہیں، جو ایک لاکھ ہیکٹر کے لئے درکار ہے۔ وزیراعظم کو دی جانے والی بریفنگ میں لانگ ٹرم اور شارٹ ٹرم پلان دیا جائے گا۔ لانگ ٹرم پلان میں سپرے کے لئے آٹھ جہازوں کی خریداری کی تجویز دی جائے گی، کیونکہ اس وقت 1960 کے تین جہاز وزارت کے پاس سپرے کے لئے موجود ہیں۔ ان میں سے ایک جہاز خراب ہے، جبکہ دو جہاز کام کرسکتے ہیں۔ تاہم اس وقت جدید جہازوں کی ضرورت ہے۔ جبکہ شارٹ ٹرم منصوبے میں سپرے کے لئے جہاز کرائے پر لینے کی تجویز دی جائے گی۔

وزارت تحفظ خوراک نے چین سے بھی سپرے کے لئے جہاز مانگے ہیں۔ مگر تاحال چین کی جانب سے جواب موصول نہیں ہوا ہے۔ ذرائع کے مطابق پاک فوج کی جانب سے وزارت تحفظ خوراک کو مکمل تعاون کی یقین دہانی کروائی گئی ہے۔ اس کے علاوہ سرویلینس کے لئے ٹیمیں بنائی گئی ہیں تاکہ کہیں بھی فصل کر حملے کی صورت میں فوری اطلاع مل سکے۔

اس حوالے سے جب سیکرٹری تحفظ خوراک ڈاکٹر ہاشم پوپلزئی سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے بتایا کہ وزیراعظم سے ہنگامی اجلاس کے لئے وقت مانگ لیا ہے جس میں انہیں ٹڈی دل کے حملے کے حوالے سے بریف کیا جائےگا، کیونکہ بہار کے موسم میں ٹڈی دل کے حملے کا شدید خطرہ لاحق ہے اور ہمیں ابھی سے ہی اقدامات کرنے ہونگے۔ انہوں  نے بتایا کہ اجلاس میں وزارت کی جانب سے مختلف تجاویز دی جائیں گی۔ اجلاس میں دیگر تمام شراکت داروں کو بھی طلب کیا جائے گا۔

 

آئی ڈی: 2020/01/224/4069

متعلقہ خبریں

Leave a Comment