ٹرانسپیرنسی انٹرنیشنل بھی کرپشن پر نیب کے اقدامات کی معترف

اسلام آباد : ٹرانسپیرنسی انٹرنیشنل نے اپنی کرپشن پرسیپشن انڈیکس رپورٹ 2019 میں نیب کے اقدامات کی تعریف کی ہے۔ سی پی آئی رپورٹ میں سال 2019 کے دوران چیئرمین نیب جسٹس جاوید اقبال کی سربراہی میں نیب کے اقدامات کی تعریف کی گئی ہے۔

ٹرانسپیرنسی انٹرنیشنل نے مجموعی طور پر پاکستان میں کرپشن کے اضافہ کا انکشاف کیا مگر اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ قومی احتساب بیورو (نیب)کے اقدامات بدعنوانی کے اندھیرے میں امید کی شمع کے طور پر جلتے رہے۔ چیئرمین نیب کی زیر نگرانی بدعنوانی کے تدارک کیخلاف نیب کی پالیسیاں متاثر کن ثابت ہوئیں، جن میں متعارف کروایا گیا کمبائینڈ انویسٹی گیشن ٹیم سسٹم سر فہرست رہا۔نیب کی جانب سے ملزمان کو سزائیں دلوانے کا تناسب 70 فیصد سے زائد رہا جو قابل ستائش ہے۔۔نیب نے صرف 1 سال (2019) کے دوران بدعنوان عناصر سے 153 ارب روپے وصول کئے جو نیب کا تاریخی کارنامہ ہے۔

رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ ایک سال کے دوران نیب کے پراسیکیوشن ونگ کی کارکردگی ماضی سے بہتر رہی اور بدعنوانی کے 530 ریفرنسز احتساب عدالتوں میں داخل کئے گئے۔ بین الاقومی طور پر بدعنوانی میں اضافہ نظر آیا۔ تاہم انسداد بدعنوانی کے دیگر اداروں کیلئے نیب کے اقدامات مشعل راہ کے طور پر نمایاں ہوئے ہیں۔ نیب اگاہی و تدارک ونگ کی بدعنوانی کے پھیلائو کیخلاف مہم بھی قابل ستائش تصور کی گئی، جس سے عوام کو کرپشن کیخلاف آگاہی ملی۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ نیب سارک ممبر ممالک کیلئے بھی قابل تقلید کردار ادا کر رہا ہے۔ بدعنوانی کے پھیلائو میں دیگر عوامل بھی کردار ادا کرتے ہیں جن کا بلاواسطہ اثر کرپشن انڈیکس پر اثر پزیر ہوتا ہے۔

 

آئی ڈی: 2020/01/24/4076

متعلقہ خبریں

Leave a Comment