زرعی سیکٹر کے فروغ کے لیے ایوان زراعت کے قیام کی تجویز

اسلام آباد: وزارت قانون کی جانب سے قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے غذائی تحفظ و تحقیق کی ذیلی کمیٹی کو ایوان زراعت کے قیام کے بل میں مزید ترمیم کی تجویز دیدی گئی ہے۔
چوہدری محمد اشرف کی سربراہی میں قومی اسمبلی کی قائم ہ کمیٹی برائے غذائی تحفظ و تحقیق کی ذیلی کمیٹی کا اجلاس ہوا۔ اجلاس میں چیمبر آف ایگری کلچر بل 2020 زیر بحث آیا۔ بل کے موور ریاض فتیانہ نے کہا کہ یہ ایوان ایک ریگولیٹری اتھارٹی ہو گا۔ اس ایوان زراعت کے 19 رکن ہوں گے جبکہ ایک سے پانچ ایکڑ زرعی اراضی کی ملکیت رکھنے والے پانچ افراد ایوان زراعت کے ممبر ہوں گے۔ ایوان زراعت میں ایک خاتون ممبر ہوگی اور 6 سے 12 ایکڑ کی مالکیت رکھنے والے چار ممبران ہوں گے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ ایگرو بیسڈ انڈسٹری کے نمائندے بھی ایوان زراعت کے رکن ہوں گے۔ مزارعوں کیلئے بھی ایک سیٹ ایوان زراعت میں رکھی جائیگی۔ ایوان زراعت ملک میں زرعی سیکٹر کے فروغ کیلئے کام کریگا۔
کنوینئر کمیٹی نے کہاکہ ٹیوب ویلوں کا ریٹ طے ہے لیکن ساتھ ٹیکسوں کی بھرمار ہے۔ وزارت لاء ڈویژن نے کہا کہ بل پورے ملک کیلئے لایا جاسکتا ہے۔ لاء ڈویژن حکام کی جانب سے بل میں ترامیم کی تجویز دی گئی جس پر بل کی منظوری موخر کر دی گئی۔

 

آئی ڈی: 2020/01/24/4215

متعلقہ خبریں

Leave a Comment