وفاقی حکومت نے گندم کے بعد چینی بھی درآمد کرنے کا فیصلہ کر لیا

اسلام آباد: حکومت نے گندم کی درآمد کے بعد چینی بھی درآمد کرنے کا فیصلہ کر لیا۔ ذرائع کے مطابق حکومت نے تین لاکھ ٹن چینی درآمد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس حوالے سے ای سی سی سے جلد منظوری لی جائے گی۔ ای سی سی نے گذشتہ اجلاس میں ملک میں بحران کے سبب گندم بھی درآمد کرنے کی منظوری دی تھی۔

ذرائع نے مزید بتایا ہے کہ ای سی سی نے گذشتہ دو ماہ کے دوران ایک لاکھ ٹن چینی برآمد کرنے کی منظوری دی گئی تھی، مگر اب چینی کی بڑھتی قیمتوں کے سبب اس کو روکنے کی ہدایت کی ہے۔ جبکہ مزید چینی درآمد کرنے کی اجازت دی جائے گی۔ اس حوالے سے وزارت صنعت و پیداوار نے ٹی سی پی کو خط لکھا ہے کہ تین لاکھ ٹن چینی درآمد کی جائے، تاکہ چینی کی بڑھتی ہوئی قیمتوں پر قابو پایا جا سکے۔

پاکستان بیورو شماریات کے مطابق چینی کی قیمت 79 روپے فی کلو ہے، جبکہ اس کی عالمی مارکیٹ میں 62روپے کی کلو ہے۔ اسی بنا پر حکومت نے چینی درآمد کرنے کا فیصلہ کیا ہے، تاکہ چینی کی بڑھتی ہوئی قیمتوں کو کنٹرول کیا جا سکے۔ وفاقی کی جانب سے صوبوں کو خط لکھے جانے کے بعد پنجاب نے چینی کی قمیت 70 روپے مقرر کر دیا تھی، جبکہ کے پی حکومت نے بھی منافع خوروں کے خلاف ایکشن لیتے ہوئے جرمانے عائد کیے تھے۔

یاد رہے گزشتہ کئی دن سے پورا ملک آٹے کے شدید بحران سے دوچار ہے۔ چاروں صوبوں میں ہنگامی اقدامات کے باوجود عوام الناس  آٹا دستیاب نہ ہونے پر نالاں نظر آ رہی ہے۔

 

آئی ڈی: 2020/02/01/4529

متعلقہ خبریں

Leave a Comment