بلاول بھٹو نے ملک بھر میں مارچ کا اعلان کر دیا


پاکستان پیپلزپارٹی (پی پی پی) کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے حکومت سے عالمی مالیاتی ادارے (آئی ایم ایف) کے پیکج پر دوبارہ مذاکرات کرنے کا مطالبہ کر دیا ہے۔ انہوں نے خبردار کیا ہے کہ اگر ایسا نہ کیا گیا تو اس پیکج کے خلاف مارچ سے ملک بھر میں جدوجہد کیا جائے گا۔
چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹوزرداری نے لیاری میں گرین پاکستان پروگرام کے تحت 10 ہزار پودے لگانے کے اربن فارسٹ منصوبے کے پہلے مرحلے کا افتتاح کیا۔
بلاول بھٹو نے پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کی وفاقی حکومت کے اقدامات کو عوام دشمن قرار دیتے ہوئے کہا کہ یہ حکومت ہمارے عوام کے معاشی حقوق کو چھیننے کی کوشش کررہی ہے. اگر ہم اپنے صوبے کی مثال لیتے ہیں تو اب تک این ایف سی سے 140 ارب روپے کم ملے ہیں۔
ان کا کہنا تھا کہ ‘اگر این ایف سی کا پورا حصہ 140 ارب روپے مل جاتے تو سوچیے ہم اپنے نوجوانوں کو کتنی نوکریاں دلا سکتے تھے اور غریب عوام کے لیے کتنے گھر بناتے۔ وعدہ تو عمران خان کا تھا کہ 50 لاکھ گھر بنائیں گے۔
وفاقی حکومت کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ عمران خان کا وعدہ تھا کہ ایک کروڑ نوکریاں دیں گے اور 50 لاکھ گھر بنائیں گے لیکن کٹھ پتلی تبدیلی کو آئے ہوئے ایک سال سے زیادہ وقت ہوا ہے اور اس عرصے میں انہوں نے روزگار دیا نہیں بلکہ چھینا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ایک سال میں انہوں نے ایک گھر نہیں بنایا بلکہ لاکھوں گھر گرائے ہیں۔ تجاوزات کے نام پر غریب عوام کی چھت چھین رہے ہیں اور ان کی معاشی پالیسی عوام دشمن ہے۔ عوام کے معاشی قتل کے منصوبے ہیں۔
بلاول بھٹو نے کہا کہ ہم نے پہلے کہا تھا کہ یہ بجٹ عوام دشمن ہے اور پی ٹی آئی کا بھی نہیں بلکہ پی ٹی آئی ایم ایف کا بجٹ ہے اور اس ملک کے عوام اس کو نہیں مانتے ہیں۔ پاکستان پیپلپزپارٹی کے کارکن بھی نہیں مانتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جب سے یہ پی ٹی آئی ایم ایف بجٹ ہم پر زبردستی لگایا گیا ہے تب سے کس طریقے سے ہنگائی، غربت اور بے روزگاری میں اضافہ ہوا ہے۔ یہ حکومت کی ناکامی اور نالائقی تھی کہ انہوں نے آئی ایم ایف کے ساتھ صحیح مذاکرات نہیں کیے۔
چیئرمین پی پی پی نے اپنے خطاب میں کہا کہ ہمارے لیے یہ نامنظور ہے اور ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ وفاقی حکومت آئی ایم ایف کے ساتھ دوبارہ مذاکرات کرے اور ایک عوام دوست منصوبہ لائیں اور پاکستان کے موقف اور عوام کے حقوق پر سودا بازی نہیں ہونی چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ پرو پاکستان آئی ایم ایف پیکیج لانا پڑے گا ورنہ یہ عوام دشمن اور غریب دشمن پی ٹی آئی ایم ایف پیکج ہمیں اور عوام کو نامنظور ہے اور مارچ سے پورے ملک میں اس عوام دشمن اور پی ٹی آئی ایم ایف پیکج کے خلاف ایک جدوجہد کی تحریک شروع کریں گے تاکہ غریب عوام کے حقوق کا دفاع کرسکیں۔

 

آئی ڈی: 2020/02/04/4611

Leave A Reply

Your email address will not be published.