والد ہسپتال منتقل ہونے پر گھر پر رہ جانے والا معذور بچہ بھوک سے مر گیا

چین میں کورونا وائرس کے شکار والد کو قرنطینہ (quarantine) میں لے جانے کے باعث گھر میں اکیلا رہ جانے والا معذور بچہ ہلاک ہوگیا۔  یہ بچہ اپنے روزمرہ کے افعال سر انجام دینے کے لیے کلی طور پر اپنے والد پر انحصار کرتا تھا۔

تفصیل کے مطابق چین کے صوبے ہوبئی میں 16 سالہ معذور بچہ یان شینگ اپنے والد اور بھائی کے ساتھ رہتا تھا۔ حکومت چین نے اس ضمن میں غفلت کا مظاہرہ کرنے پر دو افسران کو برطرف کر دیا ہے۔

یان شینگ کا والد ہی اس کی دیکھ بھال کرنے والا واحد شخص تھا۔ تاہم ایک ہفتے قبل اس کے والد اور بھائی میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی جس پر حکام نے دونوں کو کورونا وائرس سے متاثرہ مریضوں کے ہسپتال منتقل کر دیا۔ گھر پر اکیلا رہ جانے والا یان شینگ ایک ہفتے بعد موت کے منہ میں چلا گیا۔ میڈیکل رپورٹ کے مطابق یان شینگ اس ایک ہفتے کے دوران صرف دو بار ہی کچھ کھا سکا۔

واضح رہے خیال رہے کہ چین میں خطرناک کورونا وائرس پھیل رہا ہے جس کا آغاز ووہان شہر سے ہوا۔ کورونا وائرس سے اب تک چین میں 425 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔ کورونا وائرس سے صرف چین میں 20 ہزار 438 افراد متاثر ہیں۔

 

آئی ڈی: 2020/02/04/4602

متعلقہ خبریں

Leave a Comment