میرا ایمان ہے کہ اب کشمیر آزاد ہو کر رہے گا: وزیراعظم

Imran-Khan-AJK-Assembly-05-02-2020

مظفر آباد: وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ بھارت تباہی کی جانب گامزن ہے اور میرا ایمان ہے کہ اب کشمیر آزاد ہو کر رہے گا۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ یوم یکجہتی کشمیر منانے کا مقصد کشمیریوں کے لیے اپنی حمایت کے عزم کا اعادہ ہے

وزیراعظم نے یوم یکجہتی کشمیر پرجاری اپنے پیغام میں کہا ہےکہ کشمیری عوام چھ مہینوں سے لاک ڈائون کا شکار ہیں۔ وہاں مواصلاتی نظام کی بندش ہے۔ کشمیرمیں پابندیوں نے بھارت کے جمہوریت اورانسانی حقوق کے لیے احترام کو بے نقاب کر دیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ عالمی برادری،انسانی حقوق کی تنظیمیں اور عالمی میڈیا بھارت کے ناقابل قبول اقدامات کو مسترد کر چکے ہیں۔ وزیراعظم نے مطالبہ کیا کہ مقبوضہ کشمیر میں فوجی محاصرے اور بلیک آوٹ کو فوری ختم کیا جائے اور بھارت کو غیر قانونی اور یک طرفہ کارروائیوں سے روکا جائے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ غیر قانونی طور پر گرفتار تمام افراد کو رہا کیا جانا چاہئے اور بھارتی قابض افواج کے سزا دینے کے ڈریکونین قوانین کو فوری طور پر منسوخ کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ عالمی برادری کشمیری عوام کے بنیادی انسانی حقوق اور آزادیوں کے احترام کو یقینی بنائے۔

عمران خان نے کہا کہ بھارتی متنازعہ بیان بازی اورجارحانہ اقدامات سے عالمی امن کےلیے شدید خطرات ہیں جس سے بچانے کے لئے عالمی برادری کو کردار ادا کرنا ہو گا۔  عمران خان نے کہا کہ بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے جو قدم اٹھایا اس کے بعد مجھے یقین ہے کشمیر آزاد ہوگا کیونکہ 5 اگست کو مودی نے کشمیر کی حیثیت ختم کرکے بہت بڑی غلطی کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ بھارت نے 80 لاکھ کشمیریوں کو نظربند کیا ہوا ہے، میں نے ہر فورم پرکشمریوں کا مقدمہ لڑا اور انٹرنیشنل میڈیا کو انٹرویوز بھی دیے تاکہ بھارت کا مکروہ چہرہ بے نقاب ہو۔ اقوام متحدہ، جنرل اسمبلی اور واشنگٹن میں امریکی صدر کے سامنے بھی مسئلہ کشمیر اٹھایا۔ وزیراعظم  نے کہا کہ یورپین پارلیمنٹ میں 600 ممبران نے کشمیر پر قرارداد پاس کی جب کہ بین الاقوامی میڈیا بھی اب کشمیر کو اہمیت دے رہا ہے۔ عمران خان نے کہا کہ کشمیر کے ایشوز کو اگلے لیول پر لے جانے کے لیے منصوبہ بندی کررہے ہیں۔ دنیا کشمیر پر ہمارے نکتہ نظر کو اہمیت دے رہی ہے۔

خطاب کے دوران  عمران خان نے عندیہ  دیا کہ  بھارت کشمیر سے عالمی توجہ ہٹانے کے لیے فوجی آپریشن کرسکتا ہے۔ وزیراعظم نے کہا کہ 5 اگست کے بعد ہمیں کشمیر کے معاملے پر آر ایس ایس کا فلسلفہ بے نقاب کرنے کا موقع ملا ہے  جس کے لیے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے علاوہ دیگر ممالک کے سربراہوں سے بات کی ہے۔

انہوں نے کشمیری عوام کے ساتھ غیرمتزلزل یکجہتی کا اظہارکرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کشمیریوں کے ساتھ کندھے سے کندھا ملا کر کھڑا رہے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ کشمیریوں کی سفارتی، سیاسی اوراخلاقی حمایت جاری رکھیں گے۔ کشمیریوں کواقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حق خودارادیت ملنے تک ان کے ساتھ ہیں۔

 

آئی ڈی: 2020/02/05/4744

متعلقہ خبریں

Leave a Comment