نادرا نے بھرتی کیے گئے امیدواروں کو ایک دن بعد ہی نوکری سے نکال دیا


پشاور: نادرا نے اپنے بھرتی کئے گئے 100 سے زائد قبائلی ملازمین کو ایک دن بعد ہی نوکری سے نکال دیا۔ نادرا میں بھرتی کیے گے امیدواروں نے نادرا ہیڈکوارٹر کے سامنے احتجاج کیا۔ ملازمین نے پشاور ہائی کورٹ سے رجوع کرنے کا فیصلہ کرلیا۔

16 روز قبل ٹیلی فون کال پر نوکری سے بر خاستگی کی اطلاع ملنے اور کوئی تحریری دستاویز جاری نہ ہونے کے بعد جمعرات کو قبائلی علاقوں سے منتخب کیے گئے امیدوار نادرا ہیڈ کوراٹر پہنچے۔ ٹمپریری ڈسپلیسڈ پرسنز – ایمرجنسی ریلیف پراجیکٹ میں میرٹ پر منتخب ہونے والے امیدواروں کے ساتھ چیئرمین نادرا نے ملنے سے انکار کر دیا۔

مزید پڑھیں: نادرا میں نئے بھرتی ہونے والے امیدواران سیٹ سنبھالنے سے قبل ہی برخاستگی کے خطرے سے دوچار

نادرا ہیڈ کوارٹر میں ملازمین کی ملاقات ڈی جی پراجیکٹ ،ڈی جی ایچ آر ،ڈپٹی ڈائریکٹر ایچ آر اور ۔ ٹمپریری ڈسپلیسڈ پرسنز – ایمرجنسی ریلیف پراجیکٹ کے ہیڈ سے ہوئی ،جنہوں نے امیدواروں کو بتایا کہ آپ سب کی نوکری سے برخاستگی کا خط ریجنل ہیڈ آفس پشاور کو بھیج دیا گیا ہے ،جو جلد آپ سب کو مل جائے گا۔ انہوں نے امیدواروں کو صاف صاف یہ بھی بتایا کہ ان پر  سیاسی دباو ہے اور ان نشستوں پر دوبارہ اشتہار دیا جائے  گا۔ملاقات کے بعد امیدواروں نے نادرا ہیڈآفس میں احتجاج ریکارڈ کراوایا۔ مظاہرے کرنے والوں میں اکنامکس میں گولڈ میڈلسٹ نوجوان بھی شامل ہیں۔ متاثرہ امیدواروں کا کہنا ہے کہ ہم  سرکاری اور نجی اداروں میں نوکریاں چھوڑ کر نادرا میں آئے۔ ہمارے ساتھ نا انصافی ہورہی ہے اور اگر انصاف نہ ملا تو ہم اپنی ڈگریاں جلا دیں گے۔

مزید پڑھیں: نادرا میں نئے بھرتی ہونے والے فاٹا امیدوار دربدر ہو گئے

یاد رہے کہ 21 جنوری کو نادرا میں 100 سے زائد افراد کو ٹریننگ شروع ہونے سے پہلے ہی نکال دیا گیا۔ میرٹ پر بھرتی ہونے والے امیدواروں کو صرف 6 دن بعد 27 جنوری کو بذریعہ فون اپوائنٹمنٹ منسوخی کا بتایا گیا۔ 21 جنوری کو نادرا میں اپوائنٹ کیے گئے امیداواروں کے نوٹیفیکیشن  16 روز گزرنے کے باوجودتاحال جاری نہیں ہوئے۔

 

آئی ڈی: 2020/02/07/4809

Leave A Reply

Your email address will not be published.