سپریم کورٹ کا کراچی سرکلر ریلوے کو تین ماہ میں آپریشنل کرنےکا حکم

اسلام آباد: سپریم کورٹ  نے کراچی سرکلر ریلوے کو تین ماہ میں آپریشنل کرنےکا حکم دے دیا۔   چیف جسٹس نے شیخ رشید سے مکالمہ کیا کہ یہ منصوبہ آپ ہی چلائیں گے، اور کوئی نہیں چلا سکتا ۔ آپ نہ سوئیں ہم بھی نہیں سو رہے ۔شیخ رشید نے کہا کہ تین ماہ میں منصوبہ مکمل نہیں ہوسکتا۔

چیف جسٹس گلزاراحمد کی سربراہی میں 3 رکنی بینچ نےریلوے خسارہ کیس کی سماعت کی۔ وفاقی وزیرریلوے شیخ رشید اوروفاقی وزیرمنصوبہ بندی اسدعمرپیش ہوئے۔دوران سماعت چیف جسٹس نے شیخ رشید کومخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ کی رپورٹ میں منصوبے کی تکمیل کی مدت کا ذکرنہیں۔شیخ رشید  نے کہا ٹائم لائن نہیں دے سکتے۔ 12 دن میں بہت کچھ ہوا،کراچی میں بڑی عمارتیں گرائیں۔ ناجائز عمارات گرانے میں خواتین مزاحمت کررہی ہیں۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ عدالت اورقوم آپ کی شکرگزار ہے۔یہ منصوبہ قوم کےلیے ہے،کسی کی ذات کےلیے نہیں۔عدالت نے منصوبے کو3 ماہ میں آپریشنل کرنے کےحکم  پر  اسد عمر نے کہا یہ ممکن نہیں۔چیف جسٹس نے کہا کہ آپ نہ ہونے والی بات کررہے ہیں۔ اسد عمرکا کہنا تھا کہ منصوبہ سی پیک میں شامل ہے۔معاشی حالات ٹھیک نہیں۔ بڑی فنانسنگ اصل معاملہ ہے۔چیف جسٹس نے استفسارکیا کہ منصوبہ سی پیک میں شامل کیوں کیا؟یہ منصوبہ شیخ رشید ہی مکمل کریں گے۔

شیخ رشید نے میڈیا سے گفتگو میں  کہا کہ  آج فیصلے ریلوے کے حق میں گئے۔۔ایم ایل ون ریلوے کی شہ رگ ہے۔یہ منصوبہ پانچ سال میں مکمل ہوگا۔سندھ حکومت بھی تعاون کررہی ہے۔عمران خان کے ساتھ ہوں۔

عدالت نے سندھ حکومت سے جواب طلب کرتے ہوئے سماعت 2 ماہ کےلیے ملتوی کردی۔

 

آئی ڈی: 2020/02/12/5063

متعلقہ خبریں

Leave a Comment