پی آئی اے کو 10 سال میں 3.71 کھرب کا نقصان

اسلام آباد: پاکستان کے قومی ادارے پی آئی اے کو پچھلے دس برسوں میں اربوں روپے نقصانات پہنچانے کا انکشاف ہوا ہے ۔ دس برس کے دوران ادارے میں  بھرتیوں ،خساروں کےشکار روٹس اور مجموعی  نقصان  کی تفصیلات  قومی اسمبلی میں پیش کر دی گئی ہیں۔ 
 ایوی ایشن ڈویژن کی جانب سے قومی اسمبلی میں پی آئی اے کے نقصانات اور بھرتیوں کی رپورٹ جمع کرادی گئی۔ رپورٹ کے مطابق پی آئی اے کو 2009 سے 2019 کے دوران 3 کھرب 71ارب 14 کروڑ روپے کا نقصان ہوا۔
دو ہزار نو میں قومی ادارے کا خسارہ 12 ارب روپے تھا ، 2013 میں 44 اور 2014 میں 29 ارب کا نقصان ہوا۔ دو ہزار سترہ میں پی آئی اے کو 51 ارب کا نقصان پہنچایا گیا جو 2018 میں بڑھ کر 67 ارب روپے ہوگیا۔ 2019 میں ادارے کو 53 ارب روپےکا نقصان پہنچا۔
پی آئی اے میں 10 برس کے دوران 3 ہزار 492 ملازم بھرتی کیے گئے، 2014 کے بعد کوئی بھرتی نہیں کی گئی۔ قومی ادارے میں کل 15 ہزار 52 ملازمین ہیں ، جن میں سے 11 ہزار 284 ملازمین مستقل ہیں ۔
پی آئی اے کو کن کن روٹس پر کتنا نقصان پہنچا ۔ اس کی تفصیل بھی قومی اسمبلی میں پیش کی گئی۔ پاکستان ٹورنٹو روٹ پر پی آئی اے کو 55 کروڑ اور اسلام آباد لندن روٹ پر 41 کروڑ نقصان پہنچا۔ لاہور لندن روٹ پر پی آئی اے نے 14 کروڑ ، کوپن ہیگن روٹ پر 20 کروڑ روپے کا نقصان اٹھایا۔ پیرس روڈ پر قومی ائیرلائن کو 93 اور میلان روٹ پر 74 کروڑ روپے کا نقصان ہوا۔بیجنگ ٹوکیو روٹ پر 73، کراچی لندن روٹ پر 55، سیالکوٹ لندن روٹ پر 17 اور فیصل آباد جدہ روٹ پر 12 کروڑ روپے کا نقصان پہنچا۔

 

آئی ڈی: 2020/02/13/5128

متعلقہ خبریں