مالی سال کی پہلی ششماہی؛ مالی خسارہ جی ڈی پی کے 2.3 فیصد تک پہنچ گیا


اسلام آباد: وزارت خزانہ نے چھ ماہ کے اخراجات کی تفصیل جاری کر دی  ہیں جو حکومتی ترجیحات کو واضح کرتی ہیں۔جولائی سے دسمبر تک پاکستانی کی کل آمدنی 3231 ارب روپے تھی۔ اس دوران بجٹ کا خسارہ 2.3 فیصد تک پہنچ گیا جس کی مالیت 994 ارب روپے تھی۔ پچھلے سال یہ خسارہ دو اعشاریہ سات فیصد تھا۔

جولائی سے دسمبر تک حکومت نے 4226 ارب روپے کے اخراجات کیے ۔ اس دوران حکومت نے ٹیکس آمدن سے 2465 ارب روپے اکٹھے کیے ،جس میں وفاق نے 2250 ارب اور صوبوں نے 214 ارب روپے کا ٹیکس اکٹھا کیا ۔ چھ ماہ میں نان ٹیکس آمدن 766 ارب روپے رہی۔

جولائی سے دسمبر تک دفاع پر 529 ارب روپے خرچ کیے گئے۔امن عامہ پر 72 ارب روپے ، تعلیم پر ایک ارب 24 کروڑ اور صحت پر 5 ارب روپے خرچ کیے گئے۔ اس دوران 464 ارب روپے کے ترقیاتی اخراجات کیے گئے۔ ملکی قرضوں اور سود کی ادائیگی پر 1120 ارب جب کہ اس دوران غیر ملکی قرضوں اور سود کی ادائیگی پر 160 ارب روپے خرچ کیے گئے ۔ قرضوں اور سود کی ادائیگیوں پر گذشتہ برس کے مقابلے میں 46 فیصد اضافہ ہوچکا ہے۔

 

آئی ڈی: 2020/02/14/5155

 


Leave A Reply

Your email address will not be published.