اسلام آباد میں لیبر قوانین کی خلاف ورزی; سو سے زائد کاروباری مراکز کو نوٹسز جاری


اسلام آباد: چیف کمشنر اسلام آباد کی ہدایات پر لیبر قوانین کی خلاف ورزی کرنیوالوں کے خلاف کارروائی کا آغازکر دیا گیا ہے۔ وفاقی دارالحکومت کے مشہور و معروف ریسٹورنٹس، بک شاپس اور دیگر دوکانوں کو لیبر قوانین کی خلاف ورزی پر بھاری جرمانے عائد کیے گئے ہیں۔

ذرائع کے مطابق اسلام آباد کیپیٹل ٹیریٹری (آئی سی ٹی) انتظامیہ نے متعدد دوکانوں، ریستورانوں، فیکٹریوں اور فلور ملوں کو ورکرز کوکم ازکم اجرت کے قانون کی خلاف ورزی پر جرمانے عائد کئے۔اس ضمن میں چیف کمشنر اسلام آباد عامر علی احمد کی ہدایات پر لیبر ڈیپارٹمنٹ نے ڈائریکٹر جنرل آئی سی ٹی سیدہ شفق ہاشمی کی سربراہی میں سو سے زائد دوکانوں ، ریستورانوں، فیکٹریوں، بک شاپس، میٹ شاپس وغیرہ کو جرمانے عائد کرنے کے علاوہ نوٹسز بھی جاری کر دئیے۔مذکورہ احکامات پر عمل کرتے ہوئے ڈائریکٹر لیبر ڈیپارٹمنٹ نے وفاقی دارالحکومت کے مختلف سیکٹرز میں قائم ریستورانوں، دوکانوں اور فیکٹریز کا معائنہ کیا اوربمطابق لیبر قوانین اپنے ورکرز کو کم ازکم ماہانہ اجرت 17,500روپے ادا نہ کرنے والوں پر جرمانے عائد کئے۔

واضح رہے سرکاری لیبر قوانین کے مطابق ہنر و غیر ہنر مند ورکرز کی کم از کم ماہانہ اجرت 17,500روپے ہے جبکہ آجران ان سے ہفتے میں چھ روز اور 48گھنٹے کام لے سکتے ہیں۔ آئی سی ٹی کی ویب سائٹ پر دئیے گئے اعداد و شمار کے مطابق اسلام آباد میں اس وقت 247فیکٹریاں، 4005رجسٹرڈ دوکانیںاور کاروبار، 92غیر رجسٹرڈاور68رجسٹرڈ ماربل یونٹس کام کر رہے ہیں۔اعدادوشمار میں اسلام آباد میں کام کرنے والے رجسٹرڈ ورکرز کی تعدادبیان نہیں کی گئی ہے۔

 

آئی ڈی: 2020/02/16/5165

Leave A Reply

Your email address will not be published.