پانی کو تنازعات نہیں امن کے لیے استعمال کیا جانا چاہیے: انتو گوتریس

اسلام آباد:  اسلام آباد میں موسمیاتی تبدیلی سے متعلق کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے اقوام متحدہ کے سکرٹری جنرل انتو گوتریس نے کہا کہ پاکستان اور بھارت سندھ طاس معاہدے پر عمل کرنا چایئے ۔ دونوں ملکوں میں عالمی بینک کے تحت پانی کے استعمال کا معاہدہ ہے۔
انکا کہنا تھا کہ سندھ طاس معاہدے پر عمل درآمد سے پانی کے مسئلے پر قابو پایاجاسکتا ہے۔ دونوں ملکوں کو آبی وسائل کے معاملات مل کر طے کرنا ہوں گے گلیشیئر پگھلنے سے بنگلہ دیش میں سیلاب آئےاقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل نے کہا کہ پانی تنازع کاباعث بننےکےبجائےامن کاذریعہ بنناچاہیے۔
انتو گوتریس کا مزید کہنا تھا کہ مسئلہ کشمیر پر پاکستان اور بھارت میں مذاکرات ہونے چاہئیں، کشمیر میں انسانی حقوق کی پاسداری ہونی چاہیے۔ کشمیرسمیت دنیابھرمیں انسانی حقوق کااحترام ہوناچاہیے ۔اقوام متحدہ کے سکرٹری جنرل کا کہنا تھا کہ پاکستان موسمیاتی تبدیلی سے متاثر ہونے والا دنیا کا بڑا ملک ہے ۔موسمیاتی تبدیلی کا اثر دنیا کےلیے خطرہ ہے۔ سیلاب اور قدرتی آفات سے پاکستان بہت متاثر ہوا۔ انتونیو گوتریس نے کہا کہ مقاصدکےحصول کےلیےعالمی کوششیں ناکافی ہیں۔ اقوام متحدہ میں موسمیاتی تبدیلی پر وزیراعظم عمران خان کی تقریرپراثر تھی۔
کامیاب نوجوان پروگرام کے بارے میں انتو گوتریس بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ کامیاب نوجوان پروگرام نوجوانوں کو روزگار دینے کا منصوبہ ہے۔ پاکستان کوصحت سمیت مختلف شعبوں میں چیلنجزدرپیش ہیں۔ پائیدار ترقی کے حصول کے لیے کام کی رفتار کو تیز کرنا ہوگا۔

 

آئی ڈی: 2020/02/16/5218

متعلقہ خبریں

Leave a Comment