پاکستان اور ترکی کے درمیان باہمی مفاہمت کی یادداشت پر دستخط


اسلام آباد: فیڈرل بورڈ آف ریوینیو اور ترکی کی وزارت تجارت کے درمیان تجارت اور کسٹمز تعاون کو فروغ دینے کے لئے مفاہمت کی یادداشت پر دستخط ہوئے۔ ترکی کی وزیر تجارت اور وزیر اعظم کے مشیر برائے خزانہ و ریونیو ڈاکٹر حفیظ شیخ نے مفاہمت کی یادداشت پر دستخط کئے۔

فیڈرل بورڈ آف ریونیو نے اس سلسلے میں تفصیلات فراہم کرتے ہوئے کہا ہے کہ مفاہمت کی یادداشت کا مسودہ ترکی کی طرف سے موصول ہوا جس کو تمام سٹیک ہولڈرز سے مشاورت کے بعد حتمی شکل دی گئی۔ یہ مفاہمت کی یادداشت پاکستان اور ترکی کے درمیان کسٹمز تعاون پر ہونے والے سال دو ہزار دوکے معاہدے کے تسلسل کا نتیجہ ہے۔
اس مفاہمت کی یادداشت کے تحت دونوں اطراف اشیاء اور کارگو کی بین الاقوامی نقل وحرکت سے متعلقہ معلومات اور دستاویزات کا الیکٹرانک طریقے سے تبادلہ کریں گے۔ دونوں ممالک کسٹمز سے متعلقہ معاملات پر تعاون کو فروغ دیں گے۔ درآمدات، برآمدات اور ٹرانزٹ آپریشنز سے متعلق تمام معلومات کا تبادلہ کیا جائے گا۔ سمگل شدہ اشیاء کے خلاف اور کسٹمز سزاؤ ں پر تعاون کیا جائے گا۔ایک مشترکہ ٹیکنیکل کمیٹی تشکیل دی گئی ہے تاکہ اس مفاہمت کی یادداشت پر مکمل طور پر عمل درآمد کیا جاسکے۔ اس مفاہمت کی یادداشت کی بدولت ڈیوٹیز اور ٹیکسز کی چوری کا سدباب ہو گا۔ کارگو کی کلیئرنس تیز تر ہو گی اور دونوں ممالک کے درمیان باہمی تجارت بشمول ٹرانزٹ تجارت کو فروغ ملے گااور پاکستان کے بین الاقوامی تجارتی پارٹنرز کی حوصلہ افزائی ہو گی۔
چیئرپرسن ایف بی آر نوشین جاوید امجد نے کہا کہ اس مفاہمت کی یادداشت سے دونوں اطراف کو فوائد حاصل ہوں گے۔ انہوں نے ایف بی آر کے افسران کو مفاہمت کی یادداشت کو پایہ تکمیل تک پہنچانے پر مبارک باد دی اور ان کی کاوشوں کو سراہا۔ ممبر کسٹمز محمد جاوید غنی نے تجارت اور کسٹمز چیلنجز سے نمٹنے کے لئے باہمی تعاون کی اہمیت پر زور دیاجو کہ دونوں ممالک کی معاشی ترقی کی ضامن ہے۔

 

آئی ڈی: 2020/02/16/5179

Leave A Reply

Your email address will not be published.