پشاور ہائی کورٹ نے نادرا میں نئی بھرتیوں کا اشتہارمعطل کر دیا

NADRA-Logo

پشاور ہائی کورٹ نے نادرا کی جانب سے بھرتیوں کے لئے دوبارہ شائع کئے گئے اشتہار کو معطل کرتے ہوئے چیئرمین نادرا سمیت 5 افسران سے جواب طلب کر لیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق پشاور ہائی کورٹ کے جج جسٹس اشتیاق ابراہیم نے فیصلہ سنایا۔ عدالت نے چیئرمین نادرا سمیت ڈائریکٹر جنرل پراجیکٹ، ڈائریکٹر جنرل، ڈائریکٹر، ڈپٹی ڈائریکٹر ایچ آر اور ڈائریکٹر ایچ آر سے جواب طلب کر لیا۔

واضح رہے کہ اس سے قبل نادرا نے ٹی ڈی پی – ای آر پی پروجیکٹ پر بھرتی کیے گئے 100 سے زائد امیدواروں کو برخاست کر دیا تھا۔ نئے اشتہار کے مطابق آج ان منسوخ شدہ آسامیوں پر ایک بار پھر بھرتی کے لیے ٹیسٹ لیا جانا تھا۔ سیاسی دباو پر منسوخ کی جانے والی آسامیوں پر از سر نو بھرتیوں کے لیے ایک بار پھر اشتہار  شائع کیا تھا۔

نادرا کی جانب سے شائع کئے گئے اشتہار میں اب کی بار کامیاب ہونے کیلئے انٹرویو کے علاوہ ٹیسٹ بھی پاس کرنے کی شرط رکھی گئی تھی۔ اشتہار میں امیدواروں کی سیٹس  کی تعداد  نہیں بتائی گئی۔ اشتہار میں پورے پاکستان سے امیدواران سے درخواستیں طلب کی گئی تھیں، جبکہ اس سے قبل کی جانے والی بھرتیوں پر سینیٹرز نے یہ اعتراض ہی یہ اٹھایا تھا کہ ”پہلے کی جانے والی بھرتیوں میں قبائلی افراد کو نظر انداز کیا گیا ہے”۔

واضح رہے چند روز قبل برطرف ملازمین نے پشاور پریس کلب کے سامنے  بھرپور احتجاج بھی کیا۔ متاثرین نے مطالبہ کیا تھا کہ انہیں انصاف دلایا جائے۔ برطرف کئے جانے والے ملازمین میں اعلی تعلیم یافتہ گولڈ میڈلسٹ بھی شامل ہیں۔

 

آئی ڈی: 2020/02/17/5228

متعلقہ خبریں

Leave a Comment