پی ایم ڈی سی کی عمارت کو سیل کرنے پر سیکرٹری صحت وغیرہ کو توہین عدالت کا نوٹس جاری

اسلام آباد: پی ایم ڈی سی کی عمارت سیل کرنے کیخلاف توہین عدالت کی درخواست سماعت ہوئی۔ جسٹس محسن اخترکیانی نے ریمارکس دیئے کہ وزارت کے جن صاحب نے سلطان راہی بن کرعمارت کو تالہ لگایا۔یہ انہیں زیب نہیں دیتا۔ وزارت صحت اتنی نااہل ہے کہ کیماڑی میں گیس سے لوگ کیسے مرے اندازہ نہیں لگا سکی۔ ابھی اس نے کرونا وائرس سے بھی لڑنا ہے۔

جسٹس محسن اختر کیانی نے ریمارکس دیئے کہ کیاحکومت کوسمجھانے والا کوئی نہیں۔ انہیں اندازہ نہیں کہ وہ آگ سے کھیل رہے ہیں۔ ایک ادارے کے لوگ پسند نہیں آئے توانہیں گھر بھیج دیا۔ کل حکومت کووکیل اور جج پسند نہیں آئیں گے تو کیا ہمارے لئے بھی آرڈیننس جاری کر یگی؟

جسٹس محسن اختر کا کہنا تھا کہ وزارت صحت نے عمارت کو سیل کرنے کے لئے جو لکھ کربھیجا۔ایسے الفاظ پٹواری بھی نہیں لکھتا۔ ایسا نہ کریں۔اگرحکومت سمجھتی ہے کہ پی ایم ڈی سی کونہیں ہونا چاہیے تومعاملہ پارلیمنٹ میں پیش کرے۔

 

آئی ڈی: 2020/02/19/5315

متعلقہ خبریں