امریکہ اور افغان طالبان میں سات روزہ ’’تشدد میں کمی‘‘ کا معاہدہ


امریکی محکمہ خارجہ کے ایک سینیئر عہدے دار کا کہنا ہے کہ افغان طالبان کا امریکہ سے سات روزہ  ’’تشدد میں کمی‘‘ کا معاہدہ ہوا ہے، جو کہ آج رات کسی بھی وقت شروع ہو جائے گا ۔اسی ماہ کے آخر میں طالبان اور امریکہ کے مابین امن معاہدے پر دستخط کرنے کی الٹی گنتی شروع ہو جائے گی۔
اس سات روزہ تشدد میں کمی کے معاہدے میں افغان طالبان نے امریکہ کو یقین دہانی کروائی ہے کہ وہ سات روز میں کسی بھی قسم کی پرتشدد کارروائیاں نہیں کریں گے ۔
29 فروری کو قطر کے دارالحکومت دوحہ میں امریکہ اور افغان طالبان کے درمیان امن معاہدے پر دستخط ہونے سے افغانستان سے امریکی فوجیوں کے انخلا اور انٹرا افغان مزاکرات کی راہ ہموار ہو گی، مائیک پومپیو کا کہنا ہے کہ امن معاہدہ افغانستان میں مستقل جنگ بندی کا باعث بنے گا۔
مائیک پومپیو نے ایک ٹویٹ میں کہا کہ ’’کئی دہائیوں کی کشمکش کے بعد ، ہم افغانستان میں تشدد میں نمایاں کمی پر طالبان کے ساتھ ایک سوچ پر پہنچے ہیں ۔ یہ امن کی طویل راہ پر ایک اہم قدم ہے ، اور میں تمام افغانوں سے اس موقع سے فائدہ اٹھانے کا مطالبہ کرتا ہوں‘‘۔

 

آئی ڈی: 2020/02/24/5485

Leave A Reply

Your email address will not be published.