مشرقی افغانستان میں فٹ بال گراؤنڈ میں دھماکہ، تین افراد ہلاک

افغانستان کے مشرقی صوبے خوست میں فٹ بال گراؤنڈ میں دھماکے کے بعد کم از کم تین افراد ہلاک اور درجنوں زخمی ہو گئے ہیں۔

افغان پولیس کے مطابق دھماکہ فٹ بال گراونڈ میں ہوا ہے۔  اس دھماکے سے تین افراد ہلاک اور گیارہ افراد زخمی ہوئے ہیں، دھماکے کی نوعیت کے بارے میں پتا لگایا جا رہا ہے۔
دھماکے کے بعد قانون نافذ کرنے والے اداروں نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا ہے۔  دھماکے کے بعد امدادی کارروائیاں جاری ہیں اور دھماکے میں زخمی ہونے والے افراد کو قریبی ہسپتال میں لے جایا جا رہا ہے۔

یہ حملہ اس وقت ہوا ہے جب طالبان کی جانب سے کہا گیا تھا کہ وہ افغان سکیورٹی فورسز کے خلاف جارحانہ کاروائیاں دوبارہ شروع کر رہے ہیں اور انہوں نے "تشدد میں کمی” کے معاہدے کو ختم کر دیا ہے جو طالبان اور امریکہ کے مابین قطر میں ہونے والے امن معاہدے پر دستخط سے پہلے کیا گیا تھا۔

ہفتے کے روز طالبان اور امریکہ کے مابین قطر میں امن معاہدہ طے پایا تھا جس میں امریکہ نے افغانستان میں قید طالبان کے 500 قیدی بھی رہا کرنے کا اعلان کیا تھا۔ مگر دوسری طرف افغان صدر اشرف غنی کا کہنا ہے کہ ان کی حکومت نے طالبان قیدیوں کو رہا کرنے کا وعدہ نہیں کیا ہے ۔ جیسا کہ امریکہ اور عسکریت پسندوں کے ذریعے طے پانے والے معاہدے میں کہا گیا ہے۔
اشرف غنی کے اس بیان کے بعد طالبان کے ترجمان کا کہنا تھا کہ قیدیوں کی رہائی تک افغان گورنمنٹ سے انٹرا افغان مذاکرات نہیں ہوں گے۔

 

آئی ڈی: 2020/03/02/5864

متعلقہ خبریں

Leave a Comment