بانی ایم کیو ایم کا لندن سیکریٹریٹ فروخت کرنے کا فیصلہ

لندن: متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم) کے بانی الطاف حسین دہشت گردی کیلئے اکسانے کے الزام کے مقدمے کی سماعت کے آغاز سے قبل ہی ایم کیو ایم لندن سیکرٹریٹ فروخت کر رہے ہیں۔ ایم کیو ایم کے بانی نے پورے دفتر کی، جس میں 6 کاریں پارک کرنے کی گنجائش ہے، قیمت 10 لاکھ پونڈ مقرر کی ہے۔ لیکن گزشتہ 2 ماہ کے دوران ابھی تک انھیں کوئی آفر نہیں ملی ہے۔

خیال کیا جاتا ہے کہ ایم کیو ایم کے بانی تقریباً 4 ماہ بعد اولڈ بیلی کی عدالت میں مقدمے کی سماعت کے بھاری اخراجات کیلئے فنڈز جمع کرنے کی غرض سے اپنا دفتر فروخت کر رہے ہیں۔ اس دفتر کی فرخت کے لیے تیار کیے گئے بروشر میں کہا گیا ہے کہ ایلزبتھ ہاوس کا فرسٹ فلور فروخت کیلئے موجود ہے جو کہ اسے خریدنے والوں،سرمایہ کاروں یا اس کو جدید تر بنانے کے خواہاں لوگوں کیلئے بہترین ہے۔

فلور پر ایک ریسپشن کی جگہ ہے جس کے ساتھ دفتر کیلئے ایک بڑی جگہ اور کئی پرائیوٹ دفاتر، میٹنگ رومزاور اسٹور رومز، ایک بڑا کچن اور آرام کرنے کا کمرہ ہے۔  یہ دفتر کئی ہفتے قبل فوخت کے لیے پیش کیا گیا تھا جبکہ ایک درجن سے زیادہ متوقع خریدار اس کامعائنہ کرچکے ہیں لیکن ایم کیو ایم کے بانی کو ابھی تک کسی بھی جانب سے کوئی آفر نہیں ملی ہے۔

آئی ڈی: 2020/03/03/5880

اپنا تبصرہ بھیجیں