خلیل الرحمان قمر کی ماروی سرمد سے بد تمیزی؛ سوشل میڈیا پر شدید رد عمل


اسلام آباد: مشہور ڈرامہ نگار خلیل الرحمان قمر خواتین سے متعلق اپنے غیر محتاط الفاظ اور لب و لہجے کی وجہ سے ایک بار پھر تنقید کی زد میں ہیں اور سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر ان کا نام بھی ٹرینڈ کر رہا ہے۔ گزشتہ شب ایک نجی ٹی وی شو میں خلیل الرحمان قمر اور سماجی کارکن ماروی سرمد کے درمیان شدید تلخ کلامی ہوگئی تھی۔ شو میں ‘عورت مارچ’ کو موضوع بنایا گیا تھا۔ خلیل الرحمان قمر اپنی باری پر گفتگو کر رہے تھے کہ ماروی سرمد نے ان کی بات کاٹتے ہوئے ‘میرا جسم مری مرضی’  کہا۔ معروف ڈرامہ نگار نے ان کو بات کاٹنے سے منع کیا تاہم ماروی سرمد اینکر کے منع کرنے کے باوجود اپنے الفاظ دہراتی رہیں۔ اینکر اس دوران دونوں کو روکنے کی کوشش کرتی رہیں لیکن دونوں مہمانوں نے اپنی لڑائی جاری رکھی۔

دوسری جانب پاکستان کی معروف اداکارہ ماہرہ خان نے  خلیل الرحمان قمر کو سماجی کارکن ماروی سرمد کیلئے نازیبا الفاظ استعمال کرنے پر تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ ماہرہ خان نے کہا کہ ٹی وی پر خاتون کو گالیاں دیتے شخص کو دیکھ  کر شدید افسوس ہوا ہے ، حیران ہوں کہ اس شخص کو کام پر کام مل رہا ہے۔

معروف اینکر اور سیاست دان عامر لیاقت حسین نے بھی تنقید کرتے ہوئے لکھا کہ خلیل الرحمن قمر کا فرعونی انداز دیکھ کر مولائے کائنات سیدنا علی المرتضی کرم اللہ وجہہ الکریم کا یہ قول مبارک پھر سامنے آگیا۔

معروف ماڈل عفت عمر نے کہا کہ لعنت بھیجتی ہوں اس شخص کے کام پر، جب کہ ہدایتکار نبیل قریشی نے کہا کہ بدقسمتی ہے کہ ایسا  شخص نہ صرف ٹی وی کیلئے لکھ رہا ہے بلکہ مقبول بھی ہے۔ علاوہ ازیں ہیومین رائٹس  کمیشن آف پاکستان نے خلیل الرحمان قمر کے بیان کی مذمت کرتے ہوئے کہا مصنف ماضی میں بھی طاہرہ عبداللہ سمیت کئی سماجی کارکنوں کو تنقید کا نشانہ بنا چکے ہیں اور اس طرح کا رویہ ناقابل برداشت ہے۔

آئی ڈی: 2020/03/04/5942

اپنا تبصرہ بھیجیں