کابل میں تقریب پر حملہ؛ چیف ایگزیکٹو عبد اللہ عبد اللہ محفوظ، 29 افراد ہلاک

IS-Taliban-Afghanistan-Kabul-Attack

کابل: افغانستان کے دارالحکومت کابل میں منعقدہ تقریب میں مسلح حملہ آوروں کی کارروائی کے دوران چیف ایگزیکٹو عبداللہ عبداللہ محفوظ رہے۔ اس حملے میں 29 افراد ہلاک جبکہ  کم از کم  61 افراد زخمی ہوگئے۔افغان حکام کے مطابق حملے میں 29 افراد زخمی ہو ئے۔

امریکی خبر رساں ایجنسی ایسوسی ایٹڈ پریس (اے پی) کے مطابق وزارت صحت کے ترجمان وحیداللہ مایر نے حملے میں 32 افراد کے ہلاک اور 58 کے زخمی ہونے کی تصدیق کی۔دوسری جانب افغانستان کی وزارت داخلہ کے ترجمان نصرت رحیمی نے ہلاکتوں کی تعداد 29 بتائی۔ ان کا کہنا تھا کہ اسپیشل فورسز یونٹس نے کلیئرنس آپریشن کا آغاز کرتے ہوئے دونوں حملہ آوروں کو مار دیا ہے۔ تقریب میں ملک کے چیف ایگزیکٹو عبداللہ عبداللہ سمیت متعدد اہم شخصیات موجود تھیں جن میں سے کسی کو بھی نقصان نہیں پہنچا۔

واضح رہے یہ حملہ امریکا اور طالبان کے درمیان حال ہی میں طے پانے والے امن معاہدے کے بعد کیے گئے بڑے حملوں میں سے ایک ہے۔ دوسری جانب طالبان نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ وہ اس حملے میں ملوث نہیں۔ بعد ازاں داعش نے حملے کی ذمہ داری قبول کر لی۔

یہ تقریب ہزارہ رہنما عبدالعلی مزاری کی برسی کے سلسلے میں منعقد کی گئی تھی جنہیں طالبان کی جانب سے قیدی بنائے جانے کے بعد 1995 میں قتل کردیا گیا تھا۔

یاد رہے کہ گزشتہ سال بھی اسی سلسلے میں منعقدہ برسی کی تقریب میں بھی حملہ کیا گیا تھا جس میں متعدد افراد ہلاک ہو گئے تھے اور داعش نے اس حملے کی ذمے داری قبول کی تھی۔

 

آئی ڈی: 2020/03/06/6046

متعلقہ خبریں

Leave a Comment