آرامکو نے سینیٹائزر کیلئے انسان کےاستعمال معافی مانگ لی


سعودی عرب کی تیل نکالنے اور پراسس کرنے والی ملکیتی کمپنی آرامکو نے شدید تنقید کے بعد سینیٹائزر کیلئے انسان کو استعمال کرنے پر معافی مانگ لی ہے۔

اس واقعے کے بعد کمپنی کی جانب سے جاری کیے گئے بیان میں کہا گیا ہے  کہ اس عمل کو فوری طور پر روک دیا گیا ہے اور اس طرح کا کام دوبارہ نہ ہونے کے لئے سخت اقدامات اٹھائے گئے ہیں۔ آرامکو کمپنی کی جانب سے ٹوئیٹ کیا گیا کہ سوشل میڈیا پر گردش کرنے والی تصویر پر ہمیں افسوس ہے۔ اس ٹوئیٹ میں کہا گیا ہے کہ کمپنی کو اس توہین آمیز سلوک سے سخت مایوسی ہوئی اور متعلقہ حکام کو آگاہ کیے بغیر ایسا عمل قابل افسوس ہے۔

سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کی جانے والی تصاویر میں دیکھا جا سکتا ہے کہ آرامکو کے دفتر میں ایک شخص نے ہینڈ سینیٹائزر ڈسپینر اپنے جسم پر لگا رکھا ہے اور گزرتے ہوئے لوگ اسے استعمال بھی کر رہے ہیں۔

سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر لوگوں نے اس تصویر کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا اور غیر اخلاقی اور انسانی حقوق کے خلاف قرار دیا۔ تصویر میں دکھائی دینے والا شخص سعودی شہریوں سے مشابہت نہیں رکھتا اس لیے بہت سے لوگوں نے اسے نسل پرستانہ بھی قرار دیا ہے۔

 

آئی ڈی: 2020/03/12/6330

Leave A Reply

Your email address will not be published.