چین کو کورونا کے بعد نئے چیلنج کا سامنا، جاننے کے لئے خبر پڑھیں

چین میں ایک شخص مبینہ طور پر ہنٹا وائرس کا شکار ہونے کے بعد ہلاک ہوگیا ہے۔نیوز ویک نے چین کے سرکاری گلوبل ٹائمز کے حوالے سے بتایا کہ چین کے صوبے یوننان میں اس شخص کی ہلاکت پیر کو اس وقت ہوئی جب وہ صوبہ شان ڈونگ کی جانب بس میں سفر کررہا تھا۔

اس شخص کی اسکریننگ موت کے بعد ہوئی اور بس میں موجود دیگر 32 افراد کا بھی ٹیسٹ کیا گیا حالانکہ ایسا مانا جاتا ہے کہ یہ وائرس ایک سے دوسرے انسان میں منتقل نہیں ہوتا۔ ٹیسٹ کے نتائج ابھی معلوم نہیں اور رپورٹ میں کسی کا نام اور موت کی وجہ بھی بیان نہیں کی گئی۔

مریکا کے سینٹرز فار ڈیزیز کنٹرول اینڈ پریونٹیشن کے مطابق ہنٹا وائرس کے خاندان کے جراثیم عام طور پر چوہوں سے پھیلتے ہیں اور یہ اس وقت انسانوں میں منتقل ہوتا ہے جب جانور کے پیشاب، فضلے اور تھوک میں موجود وائرس کے ذرات ہوا کے ذریعے کسی فرد تک پہنچ جائیں۔

اس وائرس سے ہنٹا ہیمرج فیور رینل سینڈروم یا ہنٹا وائرس پلومونری سینڈروم کا مسئلہ لاحق ہوتا ہے۔ ابھی یہ بھی واضح نہیں کہ چین میں وائرس سے ہلاک ہونے والے شخص کو ان میں سے کن امراض کا سامنا ہوا، مگر یہ وائرس عام طور پر ایسے علاقوں جیسے جنگلات، کھیتوں یا فارمز میں نظر آتا ہے جہاں چوہوں کی موجودگی ثابت ہو۔

آئی ڈی: 2020/03/24/6863

اپنا تبصرہ بھیجیں